ْ عدلیہ مخالف ریلی،لاہور ہائی کورٹ نے ایم این اے وسیم اختر اور ایم.پی اے نعیم صفدر کو طلب کر لیا

بدھ مئی 23:19

لاہور۔2 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 مئی2018ء) لاہور ہائی کورٹ نے قصور میں عدلیہ مخالف ریلی اور ججز کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے کے خلاف دائر درخواست پرن لیگی ایم این اے وسیم اختر اور ایم.پی اے نعیم صفدر کو طلب کر لیا ۔جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے بدھ کو کیس کی سماعت کی . درخواست گزار ڈسٹرکٹ قصور بار کے وکیل میاں ظفر اقبال کلانوری نے عدالت کو بتایا کہ 13 اپریل کو قصور میں عدلیہ مخالف ریلی نکالی گئی جس میں نہ صرف عدلیہ کے خلاف متنازعہ تقاریر کی گئیں بلکہ سپریم کورٹ کے فاضل ججز کے متعلق نازیبا زبان استعمال کی گئی . عدالت نے استفسار کیا کہ جب ایف آئی آر درج اور ملزمان کے خلاف قانونی کارروائی شروع ہو چکی ہے تو پھر توہین عدالت کی کارروائی کیا ضرورت ہے۔

(جاری ہے)

دیگر درخواست گزاروں کے وکیل احسن بھون نے دلائل دیے کہ پاکستان کی تاریخ میں عدلیہ کی ایسی توہین نہیںکی گئی لہذا ملزمان کو عبرتناک سزا ملنی چاہیے ۔انھوں نے عدالت کو بتایا کہ پولیس نے ابھی تک مرکزی ملزمان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی۔ عدالت نے سماعت چار مئی تک ملتوی کرتے ہوئے ایم این اے وسیم اختر , ایم پی اے نعیم صفدر اور بلدیہ قصور کے چیرمین اور وائس چیرمین کو آئندہ سماعت پر طلب کر لیا ۔ عدالت نے آر پی او شیخوپورہ کو ہدایت کی آئندہ سماعت پر ملزمان کو پیش کیا جائے . عدالت نے واقعہ کا تمام عدالتی ریکارڈ بھی طلب کر لیا ۔