بینکاری کے شعبہ کے نفع میں رواں سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران 18 فیصد کمی

جمعرات مئی 11:10

بینکاری کے شعبہ کے نفع میں رواں سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران 18 فیصد کمی
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 مئی2018ء) رواں سال 2018ء کی پہلی سہ ماہی کے دوران بینکاری کے شعبہ کے نفع میں 18 فیصد کی کمی واقع ہوئی ہے اور جنوری تا مارچ 2018ء کے دوران بینکنگ سیکٹر کا منافع 39 ارب روپے تک کم ہوگیا ٹاپ لائن سکیورٹیز کی رپورٹ میں تمام بینکوں کی جانب سے سہ ماہی کے لئے اعلان کردہ منافع جات کا تجزیہ کیا گیا ہے جن میں الائیڈ بینک ‘ حبیب بینک ‘ ایم سی بی اور یونائیٹڈ بینک سمیت دیگر مختلف بینک شامل ہیں۔

(جاری ہے)

رپورٹ کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان کے احکامات کی روشنی میں پینشن میں اضافہ کے لئے بڑے بینکوں نے پینشن کے لئے 10.9 ارب روپے مختص کئے ہیں تاکہ کم از کم پینشن کو 8 ہزار روپے ماہانہ کیا جاسکے جس میں سالانہ 5 فیصد کی شرح سے اضافہ کیا جائے گا۔ رپورٹ کے مطابق پینشن اور کیپٹل گینز کے علاوہ بینکوں کے منافع جات میں 7 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور منافع 64 ارب روپے رہا ہے جبکہ شعبہ کی خالص آمدنی میں 9 فیصد کے اضافہ سے آمدنی 118 ارب روپے تک پہنچ گئی۔ رپورٹ کے مطابق پینشن میں اضافہ کی وجہ سے بینکاری کے شعبہ کے منافع میں کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔