فاٹا کا خیبر پختونخوا میں مکمل انضمام کے سوا کوئی دوسرا آپشن قبول نہیں،سکندر حیات شیرپائو

قبائلی عوام کی محرومیوں کے خاتمے اور اور مسائل کا واحد حل انضمام میں مضمر ہے ہم چاہتے ہیں فاٹا کو عام انتخابات سے قبل قومی دھارے میں لاکر اسمبلیوں میں نمائندگی دی جائے، شمولیتی اجتماعات سے خطاب

جمعرات مئی 21:04

فاٹا کا خیبر پختونخوا میں مکمل انضمام کے سوا کوئی دوسرا آپشن قبول ..
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 مئی2018ء) قومی وطن پارٹی کے صوبائی چیئرمین سکندر حیات خان شیرپائو نے فاٹا میں بلدیاتی انتخابات کے اعلان کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ فاٹا کا خیبر پختونخوا میں مکمل انضمام کے سوا کوئی دوسرا آپشن قبول نہیں،قبائلی عوام کی محرومیوں کے خاتمے اور اور مسائل کا واحد حل انضمام میں مضمر ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ فاٹا کو عام انتخابات سے قبل قومی دھارے میں لاکر اسمبلیوں میں نمائندگی دی جائے۔

ان خیالات کا اظہار انھوں نے یونین کونسل مرزاڈھیر اور تنگی میں دو الگ الگ شمولیتی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر اے این پی سے ڈاکٹر آمان خان ،جانس خان ،سلیمان،بلال ،ابو بکر،عثمان ،شکور خان ،الیاس اور پی ٹی آئی سے واجد خان،ساجد اللہ ،مشتاق خان،انواراللہ ،حکمت شاہ،عظیم خان،سجاد خان،بخت ولی ،فاروق،طارق،عابد،عمر خان ،سید رحمان،سخاوت شاہ،مبارک شاہ،ممتاز،عرفان اور سید رحمان نے قومی وطن پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔

(جاری ہے)

سکندر شیرپائو نے کہا کہ قبائلی علاقوں میں بلدیاتی انتخابات کرانا ایک خوش آئند اقدام ہوگا اس سے وہاں پر پائی جانے والی جمود کی فضاء کا خاتمہ ہو گا۔انھوں نے کہا کہ قومی وطن پارٹی شروع دن سے پختونوں کی یکجہتی اور اتفاق و اتحاد کیلئے عملی کوششیں کر رہی ہے تاکہ متحدہ آواز کے ذریعے ان کے حقوق و تحفظ اور وسائل پر اختیار کو یقینی بنایا جاسکے۔

انھوں نے کہا کہ قومی وطن پارٹی فاٹا کا صوبہ میں مکمل انضمام کی حامی ہے کیونکہ ہم سمجھتے ہیں کہ اس سے ایک طرف ان کی آواز مضبوط و موثر بن سکے گی تو دوسری طرف قبائلی عوام کے دیرینہ مسائل حل ہوں گے اور وہ قومی دھارے میں شامل ہوکر ملک و قوم کی ترقی میں اپنا موثر کردار اداکرسکیں گے۔انھوں نے کہا کہ ہم سیاست سے بالا تر ہوکر پختونوں کی اتحاد و اتفاق کیلئے جدوجہد جاری رکھیں گے اور ان کے حقوق کو یقینی بنانے تک چین سے نہیں بھیٹیں گے۔

انھوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی موجودہ اور سابقہ صوبائی حکومتوں نے پختونوں سے ووٹ بٹورکر ان کی بہبود کیلئے کچھ نہیں کیا جس سے نہ صرف ان کی محرومیوں اور مایوسیوں میں اضافہ ہوا بلکہ وہ ان سے بد ظن ہو چکے ہیں۔انھوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی تبدیلی بھی پختونوں نے دیکھ لی جنھوں نے پختون قوم کو آزمائشوں سے نکالنے کی بجائے مزید مشکلات میں ڈال کر اپنے ذاتی مفادات کیلئے استعمال کیا اور ان کے حقوق و بہبود اور خوشحالی کیلئے ایک قدم بھی نہیں اٹھایا۔

انھوں نے ملک میں جاری سیاسی چپقلش کو تشویشناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ اس سے پختونوں کے اہم مسائل پس پشت چلے گئے ۔ انھوں نے کہا کہ 2018کا سال قومی وطن پارٹی کا ہے کیونکہ پختونوں کو مزید کھوکھلے اور خالی خولی نعروں کے ذریعے دھوکہ نہیں دیاجاسکتا۔اس موقع پر ضلعی جنرل سیکرٹری عارف پراچہ،جاوید خان کتوزئی،مفتی افتخار،جاوید حسین،بابر علی خان اور ضلعی و تحصیل پارٹی ممبران بھی موجود تھے۔