شناختی کارڈ فیسوں میں بے تحاشا اضافہ قابل افسوس ہے، سردارحسین بابک

قومی شناختی کارڈز کا فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری اور ملک کے ہر شہری کا بنیادی حق ہے

جمعرات مئی 22:56

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 مئی2018ء) عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کے جنرل سیکرٹری سردارحسین بابک نے کہا ہے کہ شناختی کارڈ فیسوں میں بے تحاشا اضافہ قابل افسوس ہے۔ باچا خان مرکز پشاور سے جاری کردہ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ قومی شناختی کارڈز کا فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری اور ملک کے ہر شہری کا بنیادی حق ہے لیکن موجودہ حکومت کا فیسوں میں بے تحاشا اضافے سے ایسے لگ رہا ہے کہ حکومت نے اس سے کاروبار بنادیا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا کہ عوامی نیشنل پارٹی فیسوں میں اضافے کو یکسر مسترد کرتی ہے اور افسوس کا اظہار کرتی ہے کہ حکومت نے بنیادی سہولت بہم پہنچانے کے بجائے غریب عوام کیلئے اس کے حصول کو ناممکن اور مشکل بنادیا ہے۔انہوں نے کہا کہ سمارٹ کارڈ اور نارمل کارڈ کی فیس میں 400 روپے سے اضافہ کرکے 750 اور ارجنٹ کارڈ 800 سے 1500، ایگزیکیٹیو 1600 سے 2500 ڈپلوکیٹ ایک ہزار سے 2150 شناختی کارڈ کی تجدید 75 سے 400 اور شناختی کارڈ میں ترمیم و اضافہ کو 200 سے 400 روپے تک پہنچانے کے فیصلے کو فوری طور پر واپس لیا جائے جو مہنگائی اور بے روزگاری کے اس طوفان میں عوام پر اضافی بوجھ بن گیا ہے۔