قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف کا ایوان میں بجٹ پر بحث کے موقع پر اپوزیشن اور حکومتی ارکان کی عدم موجودگی پر تحفظات کا اظہار

جمعہ مئی 12:38

قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف کا ایوان میں بجٹ پر بحث کے موقع پر اپوزیشن ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے ایوان میں بجٹ پر بحث کے موقع پر اپوزیشن اور حکومتی ارکان کی عدم موجودگی پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے حکومت کو پیشکش کی ہے کہ ان حالات میں بغیر بحث کے بجٹ لے آئیں، ہم منظور کرلیتے ہیں۔ جمعہ کو قومی اسمبلی میں نقطہ اعتراض پر قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ نے کہا کہ میں نے ہمیشہ پارلیمنٹ کی بالادستی کی بات کی ہے مگر بجٹ کے دوران حکومتی ارکان کا ایوان میں موجود نہ ہونا افسوسناک بات ہے۔

(جاری ہے)

ایسی صورتحال میں بجٹ پر بحث کی کوئی اہمیت نہیں ہے، بجٹ لے آئیں اوربحث کے بغیر منظور کرا لیں، میری بھی مصروفیات اور ذمہ داریاں ہیں، ہم بھی انسان ہیں، ہم آگے کی بجائے پیچھے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن ارکان کی تعداد بھی کم ہے، ایسا نہیں ہونا چاہئے۔ بغیر کٹوتی کی تحاریک کے آج ہی بجٹ لے آئیں، ہم منظور کرلیتے ہیں، عمران خان بھی نہ آکر پارلیمنٹ کو عزت نہیں دیتے۔ سپیکر نے قائد حزب اختلاف سید خورشید احمد شاہ کے موقف کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ تمام ارکان کی اجتماعی ذمہ داری ہے کہ وہ بجٹ پر بحث کے موقع پر موجود رہیں تاہم زیادہ ذمہ داری حکومت کی بنتی ہے۔