یونانی جزیرے کے ہزاروں مقامی افراد کا مہاجرین کی آمد کے خلاف مظاہرہ

مظاہرے کے وقت یونانی وزیراعظم مذکورہ جزیرے کے دورہ پر موجود تھے،پولیس کا آنسو گیس کا استعمال

جمعہ مئی 13:15

ایتھنز(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) یونانی جزیرے لیسبوس میں مقامی افراد نے مہاجرین کی مسلسل آمد اور یورپی یونین کی مائیگریشن پالیسی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔مظاہرے کے شرکاء کو منتشر کرنے کے لیے پولیس کو آنسو گیس اور فلیش گرینیڈز کا استعمال کرنا پڑا۔ جرمن ریڈیو کے مطابق یونانی جزیرے لیسبوس میں مقامی افراد نے مہاجرین کی مسلسل آمد اور یورپی یونین کی مائیگریشن پالیسی کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔

(جاری ہے)

مظاہرے کے شرکاء کو منتشر کرنے کے لیے پولیس کو آنسو گیس اور فلیش گرینیڈز کا استعمال کرنا پڑا۔ مشتعل مظاہرین نے پولیس کی بس کو الٹانے کی کوشش بھی کی۔ پولیس کے مطابق مظاہرے میں شامل افراد کی تعداد ڈھائی ہزار کے لگ بھگ تھی۔ یہ مظاہرہ ایسے وقت میں کیا گیا جب یونانی وزیراعظم الیکسس سپراس لیسبوس میں منعقدہ ایک کانفرنس میں شریک ہونے کے لیے جزیرے پر پہنچنے والے تھے۔ مظاہرین کے مشتعل ہونے پر پولیس کی اضافی نفری بھی طلب کر لی گئی ۔