بوریوالا،اغواء برائے تاوا ن کے ملزمان کی فائرنگ،کانسٹیبل سمیت2افراد جاں بحق

جمعہ مئی 21:25

بوریوالا۔4 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) بوریوالا کے قریب اغواء برائے تاوا ن کے ملزمان کی فائرنگ سے کار سوار کانسٹیبل اور وکیل جاں بحق جبکہ ملزمان فائرنگ کرتے ہوئے فرار ہو گئے ،واقعات کے مطابق چار اغواء کاروں نے 28اپریل کو چک 42/DBیزمان بہاولپور کے زمیندار شہزاد الحسن کو کار سمیت تاوان کیلئے اغوا کر لیا تھا، بعد ازاں اغواء کاروں اور مغوی کے گھر والوں کے مابین ڈیل کے بعد چار لاکھ روپے تاوان کی ادائیگی کے بعد مغوی کو رہا کروالیا تھا جبکہ بقیہ 3لاکھ روپے تاوان بعد میں ادا کرنے کا وعدہ پر مغویوں نے کار او ر 2موبائل رکھ لئے تھے جن کی ادائیگی کیلئے آج بروز جمعہ کو اغواء کاروں اور مغوی کے ورثاء کے درمیان دوپہر کے وقت بوریوالا کے علاقہ کا وقت طے ہوا تھا، مغوی کے ورثاء، سی آئی اے پولیس کے اے ایس آئی فیصل امین اور کانسٹیبل شیخ بلال ایک پرائیویٹ کار میں طے شدہ مقام پر پہنچے، جونہی مغوی کا بھائی فیاض الحسن اور سادہ کپڑوں میں پولیس ملازمین کار سے باہر نکلے تو اغواء کاروں نے پولیس کانسٹیبل کی بندوق کی نالی کو دیکھتے ہی برسٹ کھول دیا جس کے نتیجہ میں بہاولپور کا وکیل رفیق عابد بھٹی اور سی آئی اے کا پولیس کانسٹیبل شیخ بلال چھلنی جبکہ ملزمان فائرنگ کرتے ہوئے کار میں فرار ہو گئے، مغوی کے بھائی فیاض الحسن نے بتایا کہ اغواء کاروں نے چار لاکھ روپے تاوان کے بعد ہمیں بتایا کہ میرا نام رئوف گجر ہے، میں بورے والا کا رہنے والا ہوں اور مجھے دنیا جانتی ہے، آپ وہاں آکر 3لاکھ روپے بقیہ تاوان دیکر اپنی مہران کار اور 2موبائل فون لے جانا ،اسی وعدے پر وہ پولیس کے ہمراہ بورے والا کے علاقہ اڈہ خیر والا لڈن روڈ پہنچے ہی تھے کہ ملزموں نے اندھا دھند فائرنگ کر دی، وقوعہ کی اطلاع ملتے ہی ایس پی انویسٹی گیشن وہاڑی میڈم زبیدہ پروین اور ڈی ایس پی ملک طاہر مجید وقوعہ پر پہنچے اور نعشوں کو پوسٹمارٹم کیلئے تحصیل ہیڈ کوارٹرہسپتا ل بوریوالا منتقل کر دیا، ڈی ایس پی ملک طاہر مجید نے بتایا کہ بوریوالا تحصیل کے چاروں اطراف ناکہ بندی کر دی گئی ہے، جلد ملزمان کو گرفتار کر لیا جائے گا ۔