نگراں حکومت کے قیام کی مدت میں اضافے کی تجویز غیر آئینی و قانونی ہے بھر پور مزاحمت کریںگے ،جمعیت اہلحدیث پاکستان سندھ

جمعہ مئی 23:40

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) جمعیت اہلحدیث پاکستان سندھ کی مجلس شوریٰ کا اجلاس چیف آرگنائزر مولانا محمد یوسف سلفی کی زیر صدارت مرکز اہلحدیث میں منعقد ہوا ۔ اجلاس میں نگراں حکومت کے قیام مدت میں اضافے کی تجویز کی اطلاعات پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے اسے غیر جمہوری سوچ قرار دیتے ہوئے بھرپور مزاحمت کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔

اجلاس سے مولانا محمد یوسف سلفی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آئین کے تحت نگراں حکومت کی مدت صرف اور صرف تین ماہ ہے اور اس کا واحد ایجنڈا الیکشن کا بروقت اور منصفانہ انعقاد ہے۔ تمام جمہوری و سیاسی قوتیں ملک میں پارلیمانی نظام حکومت کے تحفظ اور الیکشن کے بروقت انعقاد کے لئے متحد ہو جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کا بروقت انعقاد پر تمام سیاسی و جمہوری قوتیں متفق ہیں ہم کسی کو آئینی حدود سے تجاوز نہیں کرنے دیں گے ۔

(جاری ہے)

ملک کی سلامتی و بقا ء و آزادی پارلیمانی نظام میں مضمر ہے جو لوگ پارلیمانی نظام کے خاتمے کے درپے ہیں وہ آمرانہ سوچ کی عکاس ہیں ۔ ہم کسی صورت ملک میں آمرانہ اقدام کی اجازت نہیں دیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ آئینی اصلاحات کے نام ملک پر کسی کو قبضہ نہیں کرنے دیں گے اور پارلیمانی نظام کے تحفظ کے لئے ہر قسم کی جدوجہد کریں گے ۔ اجلاس میں ایک قرارداد کے ذریعے ملک میں رائج پارلیمانی نظام کی بھرپور حمایت و تائید کرتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا گیا کہ ہم کسی غیر قانونی و آئینی قوتوں کو کسی قسم کی تبدیلیوں اور اصلاحات کے نام پر حکومت پر قبضہ کرکے اپنا غیر جمہوری ایجنڈا مسلط نہیں کرنے دیں گے ۔

قرارداد میں کہا گیا کہ پاکستان کا قیام اسلام کے نام پر ایک جمہوری و پارلیمانی نظام کے لئے معرض وجود میں آیا تھا