وسیم اختر کا پی پی اور سندھ حکومت کے حوالے سے بیان مضحکہ خیز اور عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے، وقار مہدی

وسیم اختر کا پاکستان کے سب سے بڑے شہر اور ملکی معیشت کے دل کراچی کا مزید مئیر رہنا شہر کی ترقی کیلئے خطر ناک ثابت ہوگا، جنرل سیکرٹری پی پی پی سندھ

جمعہ مئی 22:59

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 مئی2018ء) پاکستان پیپلز پارٹی سندھ کے جنرل سیکرٹری وقار مہدی نے میز کراچی وسیم اختر کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ وسیم اختر کا پی پی اور سندھ حکومت کے حوالے سے بیان مضحکہ خیز اور عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے۔ وسیم اختر کا پاکستان کے سب سے بڑے شہر اور ملکی معیشت کے دل کراچی کا مزید مئیر رہنا شہر کی ترقی کیلئے خطر ناک ثابت ہوگا اور ان سے مئیر کا کام لینا بلی سے گوشت یا دودھ کی رکھوالی کروانے کا مترادف ہے۔

پی پی پی میڈیا سیل سندھ سے جاری بیان میں پی پی پی رہنما وقار مہدی نے متحدہ رہنماوں کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کراچی کی دو نسلوں کو تباہ صرف بانی ایم کیو ایم نے نہیں کیا بلکہ موجودہ متحدہ کے تمام دھڑوں کا بھی برابر کا ہاتھ ہی. کراچی شہر کی روشنی اگر تیس سال تک ماند رہی تو اسکی واحد ذمے دار متحدہ قومی مومنٹ ہے جس نے شہر میں بھتہ خوری، بوری بند لاشوں اور ہڑتالوں کی روایت کو عام کیا۔

(جاری ہے)

یہ متحدہ رہنما ہی تھے جو اپنے بانی کے اشارے پر شہر بند کروا دیتے تھے۔ شہر میں ایم کیو ایم کو زوال ہوا تو ترقی کا پیہ بھی تیزی چل پڑا، پی پی پی نے کم عرصے میں شہر کراچی میں ترقی کا جال بچھا دیا ہے۔ نہ صرف شارع فیصل یونیورسٹی روڈ کو مزید چوڑا کیا گیا بلکہ شہر میں کئی اوور ہیڈ برجز اور آنڈر پاسز بنایے صرف یہ ہی نہیں شہر میں صحت کے مراکز کو مزید فعال کیا جس کا ثبوت چیف جسٹس آف پاکستان کا جناح ہسپتال کو انعام کے طور پر چیک دینا ہے۔

کراچی میں جہاں لوگ آنے سے ڈرتے تھے ملک بھر سے دل کے مریض مفت علاج کروانے این آئی سی وی ڈی آرہے ہیں لیکن دوسری طرف شہری حکومت کے تحت چلنے والا دل کے امراض کا ہسپتال جرائم و کرپشن کا گڑھ بن چکا ہے، شہری حکومت کے تحت چلنے والے عباسی ہسپتال میں علاج اور دوا ناپید ہوچکی ہے مگر وسیم آختر کو اپنی سیاست سے فرصت نہیں کہ وہ اپنے زمے داری نبھائیں۔

ایم کیو ایم کے ضلعی چئیرمین اور مئیر ٹھیکوں کی بندربانٹ میں اتنے مصروف ہیں کہ انھیں یاد ہی نہیں عوام کے مسائل پر بھی توجہ دیں شاہد آج بھی ایم کیو ایم اس غلط فہمی کا شکار ہے کہ ماضی کی طرح ایک بار پھر انھیں بندوق کے زور پر ووٹ مل جائیں گے۔ وقار مہدی کا مزید کہنا تھا کہ کراچی کے مئیر اپنی چلم بھرنے کے لیے شہر کو تباہ کررہے ہیں اور کل تک فاروق ستار ان سے 6 ارب کا حساب مانگ رہے تھے لگتا ہے پوری متحدہ کو حساب دے دیا یا پھر مک مکا ہو گیا ہے انہوں نے کہا کہ شہریوں کا پیسہ ایم کیو ایم کو ہضم نہیں کرنے دیں گے۔

شہری حکومت کے ایک ایک پیسے کا حساب لیں گے۔ پی پی پی کے بغض میں لیاقت آباد میں جلسے کرنے والوں کے افکار و کردار سے کراچی کی عوام واقف ہے۔ وہ جانتے ہیں کہ یہ متحدہ رہنما کچھ دن پہلے ایک دوسرے کو کن القابات سے نواز رہے تھے۔ کراچی کے باسیوں کو سمجھ آچکی ہے کہ ان تلوں میں تیل نہیں۔ وہ متحدہ قومی مومنٹ نامی بیماری سے واقف ہیں جس نے کراچی کو اپنی جراثیم سے بہت دکھ دیے۔

جس نے مہاجر کے نام پر قتل و غارت، غنڈہ گردی، بھتہ خوری کی سیاست کو پروان چڑھایا جس نے صدیوں سے ادب سے تعلق رکھنے والے لوگوں کا چہرا مسخ کرنے میں کوئی کثر نہیں چھوڑی مگر اب ایسا نہیں ہوگا شہر کراچی کے لوگ کسی صورت ایس جماعت کو اپنے اوپر مسلط نہیں کریں گے جس کا ماضی دہشت و فرعونیت ہو۔ پی پی پی رہنما نے متجدہ رہنماوں کے پی پی مخالف بیان پر کہا کہ ایم کیو ایم والے اقتدار کے بھوکے ہیں مگر شہر کراچی کی مقامی حکومت کو جس شاہانہ انداز سے چلایا جارہا ہے اور پھر یہ توقع کی جائے کہ اس لوٹ کسھوٹ پر کوئی سوال بھی نہ کرے تو یہ ممکن نہیں، کسی جماعت کو شہری وسائل اپنے سیاسی مقاصد پر استعمال نہیں کرنے دیں گے۔

جنہوں نے شہر کو لہولہان کیا جو آج بھی شہر کے وسائل ہر قبضہ کر کے لندن، ملائشیا اور جنوبی آفریکہ جائدادیں بنانا چاہتے ہیں ان کے خلاف پی پی پی کراچی کے شہریوں کے ساتھ مل کر صف آراہ ہے اور اب کراچی کے عوام اس وقت تک چین سے نہیں بھیٹیں گے جب تک ایم کیو ایم نام کی بیماری کا جڑ سے خاتمہ نہیں کر دیں گے