کراچی میں بھتہ خور ڈیجیٹل کرنسی کی صورت میں بھتہ طلب کرنے لگے

ہفتہ مئی 16:18

کراچی میں بھتہ خور ڈیجیٹل کرنسی کی صورت میں بھتہ طلب کرنے لگے
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) بھتہ خوری کے لئے جدید ٹیکنالوجی کا استعمال کیا جانے لگا، بھتہ خور واٹس ایپ پر کال کرکے رقم ڈیجیٹل کرنسی میں طلب کرنے لگے، اب تک متعدد اہم شخصیات سے جدید ٹیکنا لوجی کے ذریعے بھتہ مانگا جا چکا ہے۔ذرائع کے مطابق بھتے کی پرچی پرانی ہوگئی، بھتہ خوری کا نیا طریقہ سامنے آگیا، کراچی میں بھتہ خور وں کے واٹس ایپ پر کال کرکے ڈیجیٹل کرنسی بٹ کوائن کی صورت میں بھتہ طلب کئے جانے کا انکشاف ہوا۔

بھتہ خوروں کی جانب سے نئی ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہوئے متعدد اہم شخصیات سے واٹس ایپ کال کے ذریعے بھتہ مانگا جا چکا ہے، متعلقہ اداروں کیپاس بھتہ خوروں کیخلاف درخواستوں کا ڈھیرلگ گیا۔تفتیشی ذرائع کے مطابق دس سے زائد رکن صوبائی اسمبلی کوبھی کالیں موصول ہوئیں جبکہ دیگر شعبوں کے تعلق رکھنے والے افراد نشانے پر ہیں۔

(جاری ہے)

ذرائع کا کہنا ہے میسج کرنے کے بعد واٹس ایپ پر ویڈیو کال سے بات کی جاتی ہے، کراچی اور سندھ اور بلوچستان کی شخصیات کو فون کیے گئے،مختلف شعبوں سیتعلق رکھنے والیافراد کو دھمکیاں ملیں، ہر فون کال کے ساتھ ہی بھتہ خور کا نمبر تبدیل ہوجاتا ہے۔

پاکستان میں ایک بٹ کوائن کی قیمت گیارہ لاکھ بتیس ہزار آٹھ سو پچاس روپیہے اور بھتہ خور بٹ کوائن میں ہی رقم طلب کر رہے ہیں۔خیال رہے اس سے قبل بھتہ خوروں کی جانب سے لوگوں کو لاکھوں روپے بھتے کی پرچی موصول ہوتی تھی۔