صوفیاء کے پیغام محبت کو عام کرنے کی ضرورت ہے،مقررین کاخطاب

ہفتہ مئی 17:51

ملتان۔5 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لنگوئیج آرٹ اینڈکلچرپلاک کی ڈائریکٹرجنرل ڈاکٹرصغریٰ صدف نے کہاہے کہ پلاک کے زیراہتمام جنوبی پنجاب سمیت ان تمام علاقوں میں میلے منعقدکئے جائیں گے جنہیں ماضی میں نظراندازکیاگیا۔انہوںنے کہاکہ ہم اس خطے کی تاریخ اورثقافت کومحفوظ کرناچاہتے ہیں۔خواجہ غلام فرید ؒ نے امن اورمحبت کا جوپیغام دیااسے آج عام کرنے کی ضرورت ہے ۔

انہوںنے کہاکہ صوفیاء نے انسانوں سے محبت کادرس دیااورآج کے دورمیں ان کے پیغام کی اہمیت مزیدبڑھ گئی ہے ۔وہ گزشتہ روز ملتان آرٹس کونسل میں پلاک کے زیراہتمام خواجہ غلام فرید میلے سے خطاب کررہی تھیں ۔ڈاکٹرصغریٰ صدف نے کہاکہ ملتان میں پنجاب رنگ ،ریڈیوکی نشریات بھی جلد شروع ہوجائیں گی اوراس کے لئے این ایف سی یونیورسٹی کے ساتھ ایم اویوپردستخط ہوچکے ہیں ۔

(جاری ہے)

خواجہ فریدمیلے کے پہلے سیشن میں خواجہ فرید کے پیغام انسانیت کے موضوع پرڈاکٹرمحمد امین ،پروفیسر شوکت مغل ،این ایف سی یونیورسٹی کے وائس چانسلرڈاکٹراخترکالرو،خالد مسعودخان ،راول محبوب کوریجہ شاکرحسین شاکر،ظہوردھریجہ ڈاکٹرمقبول گیلانی ،پروفیسرنسیم اختر،وسیم ممتاز،رضی الدین رضی ،قمررضاشہزاد،محبوب تابش ،سلیم قیصر،عامرشہزاد صدیقی نے بھی خطاب کیا۔

مقررین نے کہاکہ پلاک کے اس میلے کے نتیجے میں نہ صرف یہ کہ اس خطے کی ثقافت محفوظ ہوگی بلکہ یہاں کے فنکاروں شاعروں اورادیبوں کا بھی قومی سطح پرتعارف ہوگا۔انہوںنے کہاکہ زبانیں لوگوں کوایک دوسرے کے قریب لاتی ہیں اورایسے میلے تعصبات کے خاتمے میں معاون ثابت ہوں گے۔اس موقع پرپلاک کی جانب سے پروفیسر شوکت مغل کو ان کی تحقیقی کتا ب پرپہلاانعام شفقت تنویرمرزاایوارڈاور جہانگیرمخلص کوان کی شعری خدمات پرپہلاخواجہ فریدایوارڈاورایک ایک لاکھ روپے نقددیئے گئے ۔

دوسراسیشن محفل موسیقی پرمشتمل تھاجس میں محترمہ ثریاملتانیکر،ندیم عباس لونے والا،جمیل پروانہ ،نسیم سیمی اوردیگرگلوکاروںنے صوفیاء کاکلام پیش کیا۔محفل موسیقی میں لوگوں کی بہت بڑی تعدادشریک ہوئی۔صوفیاء کے عارفانہ کلام نے لوگوں پروجدکی کیفیت طاری کردی ،یہ میلہ رات گئے تک جاری رہا۔