وفاقی بجٹ کالعدم قرار دینے کے لئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر

Mian Nadeem میاں محمد ندیم ہفتہ مئی 17:36

وفاقی بجٹ کالعدم قرار دینے کے لئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔05 مئی۔2018ء) وفاقی بجٹ برائے سال 2019-2018 کوکالعدم قرار دینے کے لئے سپریم کورٹ میںدرخواست دائرکردی گئی،آئین کے تحت ایوان بالا اورایوان زیریں سے تعلق نہ رکھنے والا کوئی شخص بجٹ پیش ہی کرنے کا مجازنہیں۔ تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ لاہوررجسٹری میں میاں اطہرنے شفتت محمود چوہان ایڈووکیٹ کے توسط سے وفاقی بجٹ برائے سال 2019-2018 کو کالعدم قرار دینے کے لئے درخواست دائرکرادی ہے۔

درخواست گزارنے موقف اختیارکیا کہ موجودہ حکومت کو مدت پوری ہونے کی بنا پروفاقی بجٹ پیش کرنے کا اختیارہی حاصل نہیں، حکومت نے وفاقی بجٹ پیش کرکے اپنے اختیارسے تجاوزکیا جوکہ ماورائے آئین اقدام ہے جب کہ آئین کے تحت ایوان بالا اورایوان زیریں سے تعلق نہ رکھنے والا کوئی شخص بجٹ پیش ہی کرنے کا مجازنہیں ہے۔

(جاری ہے)

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ معیاد مکمل ہونے کے باوجود وفاقی بجٹ پیش کرکے ووٹرزکے اعتماد، خواہشات اور ان کے ووٹوں کی توہین کی گئی، اس لیے عدالت بدنیتی پر مبنی وفاقی بجٹ کے اقدام کو کالعدم قرار دے۔

واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت کے چھٹے اور آخری بجٹ سے چند گھنٹوں قبل مشیر خزانہ مفتاح اسماعیل کو وفاقی وزیر خزانہ کا قلمدان سونپا گیا تھا۔جس پر اپوزیشن نے شدید تنقید کی اور کہا تھا کہ اسما عیل کی تقرری آئینی ہے، جس کی مثال بھی نہیں ملتی اور وزیر مملکت برائے خزانہ، جو کہ ایم این اے بھی ہیں کی موجودگی میں یہ نہایت غیر ضروری تھی۔

یہ امرقابل ذکر ہے کہ سابق وزیرخزانہ اسحاق ڈار کو آمدن سے زائد اثاثے بنانے سے متعلق ریفرنس کا سامنا ہے اور اپوزیشن کے دباﺅ پر وہ ملک سے باہر چلے گئے تھے اور تا حال واپس نہیں آئے ہیں, 17 نومبر کو اعلیٰ حکومتی سطح پر وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو ان کے عہدے سے تبدیل کیے جانے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔بعد ازاں اسحاق ڈار کی جانب سے 22 نومبر 2017 کو وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو رخصت کی درخواست دی گئی تھی جسے منظور کر لیا گیا تھا، رخصت منظور ہونے کے ساتھ ساتھ ان سے وزارت خزانہ کی ذمہ داریاں بھی واپس لے لی گئیں تھیں، جس کے بعد وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے وزارت خزانہ اور اقتصادی امور کا اضافی چارج لے لیا تھا۔

مفتاح اسماعیل کو 27 دسمبر2017 کو وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کا مشیر خزانہ و اقتصادی امور مقرر کیا تھا۔