پنجاب بھر میں مصالحہ جات کے معیار کی جانچ پڑتال کا فیصلہ

ہفتہ مئی 17:48

راولپنڈی۔5 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) پنجاب بھر میں تمام مصالحہ ساز کمپنیوں کے تیار کردہ مصالحہ جات کے معیار کی جانچ پڑتال شروع کرنے ،غیر معیاری و مضر صحت مصالحہ ریسیپیز پر پابندی اور کمپنیز کو بھاری جرمانے کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ۔۔پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ذرائع نے اے پی پی کو بتایاکہ مختلف کھانوں میں تیار مصالحہ جات کے معیار کو جانچنے کے لیے سیمپلنگ شیڈول کے مطابق رواں ماہ کی 15تاریخ سے کمپنی نمائندگان کی موجودگی میں سیمپلنگ کا عمل شروع کر دیاجائے گا اور غیر معیاری و مضر صحت مصالحہ جات تیار کرنے والی کمپنیز کو بھاری جرمانے کیے جائیں گے ۔

پی ایف اے حکام نے قومی خبر ایجنسی کو بتایاکہ مصالحہ جات کی تیاری کرنے والی کمپنیز کے مصالحہ جات کی سیمپلنگ حاصل کر کے دو سے تین مختلف ISO17025سرٹیفائیڈ اور پاکستان نینشنل ایکریڈیشن کونسل سے تصدیق شدہ لیبارٹریز میں بھجوائے جائیں گے اور لیبارٹری نتائج کی روشنی میں کارروائی کی جائے گی ۔

(جاری ہے)

مصدقہ ذرائع نے سرکاری خبر رساں ایجنسی کو بتایاکہ مصالحے تیار کرنے والی کمپنیز کے بارے میں طبی ماہرین کے ایک گروپ نے پی ایف اے کو اپنی رائے ارسال کرتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ اکثر مصالحہ ساز کمپنیاں کھانوں کے ذائقے کے لیے مبینہ طور پر ایسے کیمیکلز ان مصالحوں میں استعمال کرتی ہیں جو کہ انسانی جسم کے لیے انتہائی مضر ہوتے ہیں تاھم ان کیمیکلز کے اثرات بتدریج انسانی جسم پر اثر انداز ہوتے ہیں ۔

پی ایف ذرائع نے اے پی پی کو بتایاکہ کھانوں میں استعمال ہونے والے مصالحہ براہ راست معدے پر اثر انداز ہوتے ہیں اس لیے ان کا معیاری ہونا ازحد ضروری ہے ۔اسی معیار کی جانچ پڑتال کے لیے فوڈ اتھارٹی نے اقدامات شروع کر دیئے ہیں ۔اس ضمن میں پنجاب فوڈ اتھارٹی نے رواں ماہ کی 10تاریخ تک مصالحہ ساز کمپنیز کو فوڈ اتھارٹی سے رابطہ کی ہدایت کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ رابطہ نہ کرنے کی صورت میں پنجاب فوڈ تھارٹی خود مختار طریقے سے نمونہ جات کے حصول کی مجاز ہو گی ۔

متعلقہ عنوان :