بلوچستان کی صوبائی اسمبلی کے نئے حلقے کن کن علاقوں پر مشتمل ہوں گی آغاز حلقہ شیرانی سے ہوگا

ہفتہ مئی 19:10

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) بلوچستان میںصوبائی اسمبلی کے حلقوں کا آغاز بھی شیرانی سے کیا گیا ہے۔۔بلوچستان کی صوبائی اسمبلی کے نئے حلقے کن کن علاقوں پر مشتمل ہوں گے بلوچستان اسمبلی کا پہلا حلقہ پی بی1شیرانی پر مشتمل ہوگا۔ باقی حلقوں کی ترتیب اس طرح ہوگی پی بی 2ژوب،پی بی3قلعہ سیف اللہ،پی بی4موسی خیل،پی بی 5لورالائی،پی بی6دکی،پی بی7زیارت کم ہرنائی،پی بی8سبی کم لہڑی، پی بی9بارکھان،پی بی10کوہلو ،پی بی11ڈیرہ بگٹی،پی بی12نصیرآبادI،پی بی13نصیرآبادIIپر مشتمل ہوگا۔

نصیرآباد کا پہلا حلقہ پی بی12ڈیرہ مراد جمالی اور چھترکی تحصیلوں پر مشتمل ہوگا۔ جبکہ دوسرا حلقہ پی بی13تمبو، بابا کوٹ، لانڈھی اور ڈیرہ مراد جمالی تحصیل کے جوڈھیر اور بیدار پٹوار سرکل کے علاقوں پر مشتمل ہوگا۔

(جاری ہے)

بلوچستان اسمبلی کا 14واں،،حلقہ پی بی14جعفرآبادI،تحصیل جھٹ پٹ پر مشتمل ہوگا،پندرہواں حلقہ،،پی بی15جعفرآباد IIکہلائے گااور اوستہ محمد اور گنداخہ کی تحصیلوں پر مشتمل ہوگا۔

جعفرآباد کی پہلے تین نشستیں تھیں اب کم کرکے دو کردی گئی ہے۔پی بی16صحبت پور،پی بی17جھل مگسی پی بی18کچھی پر مشتمل ہوگا ضلع کچھی کی پہلے دو نشستیں تھیں پی بی19پشینI،،حلقہ پی بی20پشینIIاور پی بی21پشین IIIکہلائے گا۔پی بی19پشینIسب تحصیل برشور، تحصیل کاریرزات،تحصیل بوستان اور نانا صاحب تحصیل پر مشتمل ہوگاپی بی20پشینIIتحصیل پشین ماسوائے حلقہ صدر پٹوار سرکل بند خوشدل خان پر مشتمل ہوگاپی بی21پشینIIIتحصیل حرمزئی، پٹوار سرکل بند خوشدل خان اور تحصیل سرانان پر مشتمل ہوگا۔

پی بی 22قلعہ عبداللہIتحصیل قلعہ عبداللہ ماسوائے پٹوار سرکل گلستان حلقہ قلعہ عبداللہ سب تحصیل دوبندی ماسوائے پٹوار سرکل جلگا حلقہ دوبندی پر مشتمل ہوگا۔پی بی23قلعہ عبداللہIIتحصیل گلستان، پٹوار سرکل ڑژہ بند تحصیل چمن،پٹوار سرکل گلستان قانونگو حلقہ قلعہ عبداللہ، پٹوار سرکل جلگا قانونگو حلقہ دوبندی پر مشتمل ہوگا۔پی بی24قلعہ عبداللہIIIپٹوار سرکل صدر چمن قانونگو حلقہ صدر تحصیل چمن اورمیونسپل کارپوریشن قلعہ عبداللہ پر مشتمل ہوگاکوئٹہ کے 9حلقے پی بی25سے پی بی 33تک ہوں گے پہلا حلقہ پی بی25کوئٹہ Iکچلاک تحصیل، پنجپائی سب تحصیل ، نوحصاراوربلیلی کے بیشتر حصے پر مشتمل ہوگا۔

اس حلقے کی آبادی2لاکھ 37ہزار بنتی ہے پی بی 26کوئٹہII صدر تحصیل کے علاقے درانیIپٹوار سرکل قانونگوحلقہ صدر اور بلیلی کے بعض حصوں اور2لاکھ67ہزار آبادی پر مشتمل ہوگا پی بی 27کوئٹہIIIسٹی تحصیل کے علاقے شادیزنزئیIپٹوار سرکل ،تحصیل سٹی کے علاقے قانونگوحلقہ سٹی II کے علاقے صدرIIIموضع شابو، صدرIVموضع ترخہ کاسی پر مشتمل ہوگا۔ اس حلقے کی آبادی2لاکھ23ہزار ہے۔

یہ حلقہ پرانے حلقہ پی بی4کے بیشتر علاقوں پر مشتمل ہے پی بی28کوئٹہIV میٹرو پولیٹن کارپوریشن ،،مردم شماری کے چارج نمبر9ماسوائے سرکل نمبر6,7، چارج نمبر8ماسوائے سرکل نمبر1اور2، چارج نمبر7ماسوائے سرکل نمبر2اور چارج نمبر10کے سرکل نمبر2پر مشتمل ہوگا۔ اس حلقے کی آبادی2لاکھ65ہزار بنتی ہے۔ یاد رہے کہ مردم شماری کے دوران محکمہ شماریات نے شہر کے مختلف علاقوں کو چارج ،سرکل اور بلاک پر تقسیم کیا تھا ۔

ایک چارج ہزاروں گھر وں پر شامل ہوتا ہے۔پی بی29کوئٹہVکوئٹہ چھانی ماسوائے چارج نمبر1کا سرکل نمبر1،میٹروپولیٹن کارپوریشن کے مردم شماری چارج نمبر5،6،چارج نمبر7کا سرکل نمبر2، چارج نمبر8کے سرکل نمبر ایک اور دو، چارج نمبر9کے سرکل نمبر چھ اور سات اور تحصیل صدر کے پٹوار درانی IIاور درانیIIIپر مشتمل ہوگا۔ اس حلقے کی آبادی2لاکھ60ہزار بنتی ہے۔

پی بی30کوئٹہ VI کوئٹہ چھانی کے چارج نمبر ون کے سرکل نمبر ون کے علاقے ، میٹروپولیٹن کاورپریشن کے سرکل چارج نمبر10ماسوائے سرکل نمبر2، چارج نمبر11اور12پر مشتمل ہوگا۔ پی بی31کوئٹہVIIمیٹروپولیٹن کارپوریشن کے چارج نمبر13اور 14پر مشتمل ہوگا۔ اس کی آبادی2لاکھ27ہزار بنتی ہے۔ پی بی32کوئٹہVII سٹی تحصیل کے قانونگو حلقہ کیچی بیگ IIIاور2لاکھ78ہزار آبادی پر مشتمل ہوگا۔

کوئٹہ کا آخری حلقہ پی بی33کوئٹہIXسٹی تحصیل کے قانونگو پٹوار سرکل کیچی بیگ I، کیچی بیگII،سٹی تحصیل کے قانونگو حلقہ شادینزئی IIاور شادینزئی IIIپر مشتمل ہوگا۔ اس حلقے کی آبادی2لاکھ23ہزار بنتی ہے پی بی34نوشکی،پی بی35چاغی،پی بی36مستونگ،پی بی37شہید سکندر آباد(سوراب)پی بی38قلات ہوگا۔۔حلقہ پی بی39خضدار I تحصیل خضدار ماسوائے میونسپل کارپوریشن خضدار ، تحصیل زہری، سب تحصیل کرخ ، سب تحصیل مولا پر مشتمل ہوگا۔

پی بی40خضدارII خضدار میونسپل کارپوریشن، تحصیل نال(ماسوائے گرگ اور درنالی )پر مشتمل ہوگا۔۔حلقہ پی بی41 خضدار III تحصیل وڈھ، سب تحصیل آڑنجی ،سب تحصیل سارونہ اور نال کے علاقوں گرک اور درنالی پر مشتمل ہوگاپی بی42واشک اور خاران پر مشتمل ہوگا۔پی بی43پنجگورکی تحصیل پنجگورماسوائے یونین کونسل سردو اور کلگ پر مشتمل ہوگا۔اس کی آبادی2لاکھ24ہزار بنتی ہے۔

پی بی44آواران اور پنجگور پر مشتمل ہوگا۔ اس میں پنجگور کی تحصیل پروم ، سب تحصیل گچک ، تحصیل گوارگواور یونین کونسل سردو اور کلگ شامل ہوں گے۔ اس حلقے کی آبادی2لاکھ21ہزار بنتی ہے۔ضلع کیچ کے چار حلقے پی بی45سے پی بی48تک ہوں گے پی بی45کیچI سب تحصیل بلیدہ، سب تحصیل ہوشاب، سب تحصیل زاعمران اور تربت تحصیل کی یونین کونسل شاہرگ، سامی اور پیدارک پر مشتمل ہوگا۔

پی بی46کیچII تربت میونسپل کارپوریشن اور تربت تحصیل کی یونین کونسل گینہ پر مشتمل ہوگا۔پی بی47کیچIIIدشت سب تحصیل، تحصیل مند، سب تحصیل بلنگور اور تحصیل تربت کی یونین کونسل گوکدان پر مشتمل ہوگا۔پی بی48کیچIV تحصیل تمپ ، تربت کی یونین کونسل ناصر آباد ، کلاتک اور نودیز پر مشتمل ہوگا۔ پی بی49لسبیلہI حب تحصیل، تحصیل دریجی ، تحصیل گڈانی اور وندر تحصیل کے علاقے سونمیانی پر مشتمل ہوگا۔

پی بی50لسبیلہII تحصیل بیلہ، تحصیل اوتھل ، تحصیل وندر اور سونمیانی کے بعض علاقوں، تحصیل لاکھڑا، تحصیل کنراج اور تحصیل لیاری پر مشتمل ہوگا۔ بلوچستان اسمبلی کا آخری حلقہ پی بی51گوادر پر مشتمل ہوگا۔۔الیکشن کمیشن آف پاکستان نے نئی حلقہ بندیوں کی ابتدائی فہرست جاری کردی۔ قومی اسمبلی میں بلوچستان کی جنرل نشستیں16ہوگئیں جبکہ صوبائی اسمبلی کی جنرل نشستیں 51ہی برقرار رہیں گی۔

کوئٹہ کی قومی اسمبلی کے حلقوں کی تعداد ایک سے بڑھ کر تین جبکہ صوبائی اسمبلی کے حلقوں کی تعداد6سے بڑھ کر 9ہوگئی۔کیچ کو گوادر سے الگ کرکے قومی اسمبلی کا علیحدہ حلقہ بنادیا گیاحلقہ این ای268پانچ اضلاع مستونگ، چاغی، قلات، شہید سکندر آباداور نوشکی اور10لاکھ83ہزارنفوس پر مشتمل آبادی کے لحاظ سے صوبے کا سب سے بڑااورحلقہ این ای262کچھی، جھل مگسی 3لاکھ86ہزار نفوس پر مشتمل بلوچستان کا آبادی کے لحاظ سے سب سے چھوٹا قومی اسمبلی کا حلقہ ہوگا۔۔بلوچستان کے قومی اور صوبائی اسمبلیوں کا آغاز اب کوئٹہ کی بجائے شیرانی سے ہوگا۔