امریکی وزیر خارجہ طاقتور سفارتکاری سے ایران کو لگام ڈالنے کے لئے پر عزم

ایران شام، یمن اور خطّے میں عدم استحکام کا باعث، کوریائی معاملہ بھی دبائو اور اعلیٰ سفارتکاری سے سلجھا،مائیک پومیو

ہفتہ مئی 20:55

امریکی وزیر خارجہ طاقتور سفارتکاری سے ایران کو لگام ڈالنے کے لئے پر ..
واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) نئے امریکی وزیر خارجہ مائیک پومیو طاقتور سفارتکاری سے ایران کو لگام ڈالنے کے لئے پر عزم ہیں،،ایران شام، یمن اور خطّے میں عدم استحکام کا باعث ہے،شمالی کوریا کا معاملہ بھی دبائو اور اعلیٰ سفارتکاری سے سلجھا ہے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکا کے نئے وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے "طاقت ور سفارت کاری" پر زور دیا ہے جس کا مقصد "ایک بھی گولی چلائے بغیر مسائل کا پر امن حل" ہوتا ہے۔

جمعے کے روز وزارت خارجہ میں امریکی سفارت کاروں کے ایک گروپ کے سامنے گفتگو کرتے ہوئے پومپیبو کا کہنا تھا کہ "ہم اس وقت کڑے دور سے گزر رہے ہیں۔ مضبوط قیادت ہونے کے حوالے سے مطالبات موجود ہیں۔ یہ بہت ضروری ہے کہ ہماری ٹیم خطرات کے سامنے دلیری اور طاقت کے ساتھ کھڑی ہو"۔

(جاری ہے)

امریکی وزیر خارجہ نے ایران کو لگام دینے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں مشرق وسطی میں طاقت ور سفارتی کوششوں کی ضرورت ہے تا کہ ایران کے برتاؤ کو قابو کیا جا سکے جو شام، یمن اور خطّے میں عدم استحکام کا باعث ہے۔

مجھے اپنی ٹیم کی صلاحیت پر پورا بھروسہ ہے کہ وہ ایسی حکمت عملی ترتیب دے سکتی ہے جس سے ان بحرانات کو حل کیا جا سکی"۔۔مائیک پومپیو نے ان معاملات سے نمٹنے کے حوالے سے امریکی صدر کے طریقہ کار کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ "خوش قسمتی سے ہمارے پاس ایسا صدر ہے جو خود طاقت ور سفارت کاری پر یقین رکھتا ہی"۔ امریکی وزیر خارجہ نے اس موقع پر حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ "شمالی کوریا پر دباؤ برقرار رکھا گیا تا کہ اسے مذاکرات پر مجبور کیا جا سکے۔ اس کا مقصد یہ ہے شمالی کوریا کے سربراہ کِم یونگ اٴْن کے جوہری اسلحے خانے کے خطرے پر کامیابی سے قابو پا لیا جائی"۔توقع ہے کہ شمالی کوریا کے سربراہ عنقریب ایک تاریخی سربراہ ملاقات میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملیں گے۔