پشاور،پشتوزبان کے معروف شاعر،ادیب،ماہر تعلیم پروفیسر فرمان الدین بخشالوی کی یاد میں تعزیتی ریفرنس کا انعقاد

ہفتہ مئی 21:26

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) پشتوزبان کے معروف شاعر،ادیب،ماہر تعلیم اور خدائی خدمتگارپروفیسر فرمان الدین بخشالوی کی یاد میں پریس کلب مردان میں تعزیتی ریفرنس منعقد ہوا جس کا اہتمام خدائی خدمتگار ڈاکٹر محمد یوسف یوسفزئی اور صنعتکارحاجی مسعود ائر حمان نے کیا تھا،جس میں فرمان الدین بخشالوی کے فرزند اعجاز الدین بخشالوی،بھتیجے فیا ض الدین،پوتے عظمت الدین،،ڈاکٹر ظفر بخشالوی سمیت کئی ان کے قریبی سیاسی و نظریاتی دوستوں و ساتھیوں نے بھی شرکت کی۔

اِس موقع پر سیاسی کارکنان اور نوجوانوں کی بڑی تعداد موجود تھی۔ فرمان الدین کو خراجِ عقیدت پیش کرنے کے لیے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی اور انکے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کی گئی۔ سٹیج سیکرٹری اکبر ہوتی تھے جبکہ مقررین میں سابق صوبائی وزیر اطلاعات عبد السبحان خان،خدمتگار ڈاکٹر محمد یوسف یوسفزئی ،صنعتکارحاجی مسعود ائر حمان،عزیز مانیروال،یعقوب خان کاکا،عنایت باچہ ایڈوکیٹ،صحافی ہدایت ائر حمان ہوتی،عمرزادہ افغان،مہر اند یش،ِ مولانا امین جان اور دیگر نے فرمان الدین کی جدوجہداور انکی سیاسی و سماجی بصیرت کے حوالے سے اظہار خیال کیا۔

(جاری ہے)

مقررین نے کہا کہ وہ ایک جرات مند انسان تھے جس کا اظہار ہم ان کی تحریروں میں واضح طور پر ملتا ہے۔انہوں نے کہا کہ مرحوم بے پناہ صلاحیتوں کے مالک تھے وہ سماجی کارکن تھے۔ عوامی مسائل کی حل کرنے میں منفرد صلاحیت رکھتے تھے اور بعض اوقات نہایت ذمہ دار حکومتی افراد کے سامنے بلا جھجک اٴْن کی کوتاہیوں کا تذکرہ کرتے اورعوامی کاموں میں مصلحت پسندی اٴْسے بالکل قبول نہیں تھی، اس کے باوجود وہ ایک درویش صفت انسان تھے۔

مہمان نوازی، خدمت، سخاوت اٴْن میں کوٹ کوٹ کر بھرا ہوا تھا۔۔غریب و نادار لوگوں کی مفلسی اٴْن سے نہیں دیکھی جاتی۔ اور کسی بھی فقیر، ضرورت مند کو وہ خالی ہاتھ نہ لوٹاتے اور وسیع دسترخوان کے مالک تھے۔تقریب کے آخر میں سابق صوبائی وزیر اطلاعات عبد السبحان خان نے خدمتگار ڈاکٹر محمد یوسف یوسفزئی اورصنعتکارحاجی مسعود ائر حمان کی طرف سے مرحوم کے فرزند اعجاز الدین بخشالوی کو پورٹریٹ پیش کی جبکہ بھتیجے فیا ض الدین کو پگڑی پہنائی۔