کراچی میں انسداد پولیو مہم 7 مئی سے شروع ہو گی، 170یونین کونسلوں میں 19 لاکھ سے زائد بچوں کو قطرے پلائے جائیں گے۔ کمشنر کراچی

ہفتہ مئی 21:50

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء) کمشنر کراچی اعجاز احمد خان نے کہا ہے کہ کراچی میں انسداد پولیو مہم 7 مئی سے شروع ہو گی،170یونین کونسلوں میں 19 لاکھ سے زائد بچوں کو قطرے پلائے جائیں گے، مہم سات روز جاری رہے گی۔ اس حوالے سے کمشنر کراچی کی زیر صدارت اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں ڈی آئی جی پولیس جنوبی آزاد خان، تمام ڈپٹی کمشنرز، صوبائی ایمرجنسی آپریشن سینٹر کے افسران، ڈسٹرکٹ اور ٹائون ہیلتھ افسران، عالمی ادارہ صحت کی ٹیم لیڈر یونیسف، بل گیٹس فائوندیشن، روٹری کلب کے نمائندے،کمشنر کراچی پولیو ٹاسک فورس کے کو آرڈینیٹر ڈاکٹر نصرت علی ڈائریکٹر ہیلتھ ، محکمہ ہیلتھ کے دیگر افسران ، پولیس ،،پاکستان رینجرز کے افسران اور دیگر نے شر کت کی۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ مہم میں 19 لاکھ زائد بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے کراچی کی 170 یونین کونسلوں میں مہم پر عملدرآمد کیا جائے گا تقریباآٹھ ہزار پولیو ٹیمیں فرائض انجام دیں گی ۔

(جاری ہے)

والدین کا تعاون حا صل کر نے کے لئے کوششوں کو موثر بنانے کے لیے مختلف تجاویز پر غور کیا گیا ۔ کمشنر نے کہا کہ مہم کو موثر بنانے اور رہ جانے والے بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کے لئے آگاہی مہم شروع کر نے کی ضرور ت ہے جس کے ذریعے جس کے ذریعے والدین میں شعور اجاگر کر نے میں مدد ملے اور وہ اپنے بچوں کو پولیو سے بچائو کے لئے پولیو کے قطرے پلانے کی جانب راغب ہوں۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ والدین میں پولیو ویکیسین کی افادیت اور اہمیت کے بارے میں شعور اجاگر کرنے اور ان کا تعاون حاصل کر نے کے لئے جامع منصوبہ بندی کے ساتھ ذرائع ابلاغ کی مدد سے ترغیبی مہم شروع کی جائے گی۔ کمشنر نے متعلقہ افسران سے کہا کہ وہ اس سلسلہ میں اقدامات کریں۔ کمشنر نے کہا کہ ترغیبی مہم میں الیکٹرانک میڈیا ، پرنٹ میڈیا اور سوشل میڈیا کو ترغیبی مقاصد کے ساتھ سائنٹفک تقاضو ں کے مطابق استعمال کیا جائے گا ۔

جس کے ذریعے اس بات کو واضح طور پر اجاگر کیا جائے کہ پولیو ویکسین محفوظ ہے۔ اور اس سے آپ کے بچہ کی زندگی محفوظ ہوگی۔کمشنر نے والدین سے اپیل کی کہ وہ پانچ اور اس سے کم عمر بچوں کو پولیو کے قطرے ہر مہم میںپلائیں۔ بار بار قطرے پلانے سے ان میں قوت مدافعت بڑھے گی اور وہ پولیو وائرس محفوظ رہیں گے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ کراچی سمیت سندھ میں گذشتہ سال کوئی بھی پولیو کیس سامنے نہیں آیا۔

اجلاس کو بتایا گیاکہ کراچی سندھ اور ملک بھر کی تاریخ میں بہت کم پولیو کیس ہوئے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ پولیو ویکسین محفوظ ہے اور بچوں کو اس سے فائدہ ہوا ہے۔ سعودی عرب اور دیگر اسلامی ممالک سمیت ساری دینا میں اسی ویکسین سے پولیو کا خاتمہ کیا گیا ہے۔کرنل ریٹائرڈ شاہد محبوب نے اجلاس کو سیکورٹی کی صورتحال کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی۔ انہوں نے کہا کہ انسداد پولیو مہم میںپولیس کابھر پور تعاون حاصل ہے، پولیو مہم میں سیکورٹی کے فول پروف اقدامات کئے جائیں گے۔