عراق ، امریکی قیادت والے اتحاد کا افواج کی تعداد میں کمی لانے کا فیصلہ

اتوار مئی 10:20

واشنگٹن ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) داعش کے خلاف امریکی قیادت والے اتحاد نے جمعے کے روز کہا ہے کہ اگر بًری فوج کی مشترکہ کمان کے صدر دفتر کو بند کرنے کا فیصلہ کیا جاتا ہے تو اٴْن کی افواج کی ایک چھوٹی تعداد کا عراق سے انخلا ہوسکتا ہے۔اتحاد نے بغداد میں ایک تقریب میں اعلان کیا کہ فوج کا ہیڈکوارٹر بند کیا جا رہا ہے۔ اعلان میں کہا گیا ہے کہ اس فیصلے کے نتیجے میں عراق اور شام میں داعش کے خلاف بڑی حربی کارروائیاں بند ہوں گی، جب کہ اتحاد کی ذمہ داریاں تبدیل ہو جائیں گی۔

(جاری ہے)

اتحاد کے ترجمان، امریکی فوج کے کرنل ٹھومس ویل نے 'وائس آف امریکہ'' کو بتایا کہ ''ہیڈکوارٹرز کو مضبوط کرنے کی صلاحیت کی بدولت کارروائیوں کے ضمن میں اہل کاروں کی نفری کچھ قدر کم ہوگی''۔ویل نے کہا کہ اس تبدیلی کے نتیجے میں واحد ہیڈکوارٹرز کے سائے تلے اتحادی مشن مضبوط ہوگا تاکہ عراقی سکیورٹی افواج (آئی ایس ایف) کی مشاورت اور اعانت ہوسکے۔۔عراق میں اتحادی افواج کی اصل تعداد کا علم نہیں۔ لیکن، امریکا نے کہا ہے کہ اٴْس کے اندازے کے مطابق ملک میں افواج کی تعداد 5000 ہے۔ویل نے کہا کہ وقت کزرنے کے ساتھ رفتہ رفتہ یہ تعداد کم ہوگی، ایسے میں جب آئی ایس ایف کی صلاحیت اور استعداد میں اضافہ ہوگا۔

متعلقہ عنوان :