سوہانجناکے پتے ‘بیج‘چھال‘ گوند‘ جڑیں اورتیل سے موذی امراض کا علاج کیا جاسکتاہے، گلریزشہزاد

اتوار مئی 13:10

لاہور۔6 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) طبی اورغذائی امورکے ماہرین کا کہناہے کہ سوہانجناکے پتے ‘بیج‘چھال‘ گوند‘ جڑیں اورتیل سے موذی امراض کا علاج کیا جاسکتاہے‘برطانیہ سے تعلق رکھنے والے زرعی وسہانجناماہر گلریزشہزادنے اس حوالے سے بتایا کہ سوہانجناکے ذریعے گردوں‘ جگر‘بلڈپریشر‘ کولیسٹرول‘ شوگر‘موٹاپا‘کینسر‘ جوڑوں کے درد‘ چہرے کی جھریوں ‘ایڈز اور یرقان کا شافی علاج کیاجاسکتاہے اس پودے کو قدرت نے بھرپور قوت مدافعت دی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ کاشتکار سہانجنے کے درختوں کو کاشت کرکے دیگر روایتی فصلوں ‘سبزیوں اور درختوں کی نسبت زیادہ آمدن بھی حاصل کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سہانجنازمین پر پائے جانیوالے دیگر پودوں‘ درختوں اور فصلوں کی نسبت زیادہ غذائی قوت رکھتاہے جس کو سبزی‘فوڈسپلیمنٹ ‘سبزچائے‘ جانوروں کے چارے اور دوائی کے طورپر استعمال کیاجاسکتاہے۔

متعلقہ عنوان :