چوہدری نثار پریس کانفرنس سے کیا پیغام دینا چاہتے تھے؟

چوہدری نثار چاہتے ہیں کہ مجھے نواز شریف خود پارٹی سے نکالیں ، ن لیگ کی جب پتنگ کٹ جائے تو میں پارٹی قیادت سنبھالوں

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان اتوار مئی 13:37

چوہدری نثار پریس کانفرنس سے کیا پیغام دینا چاہتے تھے؟
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 05 مئی2018ء)  معروف صحافی چوہدری غلام حسین نے گزشتہ روز سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی کی گئی پریس کانفرس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ چوہدری نثار اس پریس کانفرس سے یہ پیغام دینا چاہتے تھے کہ میں مسلم لیگ ہوں اور نواز شریف اور مریم نواز مجھے نکال دیں۔تاکہ یہ بات مجھ پر نہ آئے کہ چوہدری نثار علی خان پارٹی چھوڑ کر چلے گئے ہیں۔

اس لیے وہ کہتے ہیں کہ میں پیدائشی مسلم لیگی ہوں۔۔چوہدری نثار یہ بھی ظاہر کرنا چاہتے ہیں کہ جب ن لیگ کی پتنگ کٹ جائے گی تو صرف میں ایک واحد لیڈر میدان میں ہوں گا۔اور میں پھر ن لیگ کی قیادت سنبھالوں گا۔چوہدری غلام حسین کا مزید کہنا تھا کہ ایک بات میں صاف طور پر بتا دوں کہ 2013کے الیکشن امریکہ نے کروائے تھے۔

(جاری ہے)

اور مسلم لیگ ن لاہور میں سیٹیں ہار چکی تھی۔

تو سعد رفیق نے نواز شریف کو فون کر کے صورتحال سے آگاہ کیا تونواز شریف نے کہا کہ حوصلہ کرو ہم جیت جائیں گے۔یاد رہے کہ گزشتہ روز چوہدری نثار علی خان نے پریس کانفرس کرتے ہوئے کہا تھا کہ نواز شریف کے خلائی مخلوق اور عمران خان کے فوج کے کردار سے متعلق بیانات افسوسناک ہیں،ساری زندگی نوازشریف کا سیاسی بوجھ اٹھایا لیکن جوتیاں اٹھانے والا نہیں ہوں،بڑے بڑے امتحان آئے کبھی پارٹی کو نہیں چھوڑا،،نواز شریف اور ان کی بیٹی مجھ پر طعنہ زنی میں مصروف رہے، نواز شریف کے ذاتی ملازم بھی میرے خلاف باتیں کر رہے ہیں، پیغامات لیکس اور کان میں کھسر پھسر کے ذریعے حملے ہضم نہیں کر سکتا،34سالہ پارٹی وفاداری کے بعد آج وضاحتیں دے رہا ہوں ،ا س سے لگتا ہے کہ ساری زندگی ضائع کی،،نواز شریف اگر خوشامدی ٹولے سے نکلیں اور ملک و قوم کے مفاد میں فیصلے کریں،میں نہیں پوری قوم ان کے ساتھ کھڑی ہو گی،،نواز شریف کی طرف سے یہ کہنا کہ وہ پہلے نظریاتی نہیں تھے اب نظریاتی ہو گئے یہ سن کر پشیمانی ہوئی،اگر نواز شریف اب نظریاتی ہو گئے ہیں تو کہیں محمود اچکزئی کا نظریہ تو نہیں اپنا لیا،میں نے پارٹی چھوڑی نہ پارٹی چھوڑنے کا ارادہ ہے۔