چوہدری نثار نواز شریف کو عدالتوں سے سزا ہونے سے بچنے کے مشورے دیتے رہے

چوہدری نثار شریف خاندان کی کرپشن بچانے کے لئے دل و جان سے نواز شریف کے ساتھ تھے

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان اتوار مئی 14:15

چوہدری نثار نواز شریف کو عدالتوں سے سزا ہونے سے بچنے کے مشورے دیتے رہے
لاہور (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 06مئی 2018ء) :معروف صحافی رؤف کلاسرا کا کہنا ہے کہ سابق وزیر داخلہ  چوہدری نثار سابق وزیر اعظم نواز شریف کو عدالتوں سے سزا ہونے سے بچنے کے مشورے دیتے رہے چوہدری نثار شریف خاندان کی کرپشن بچانے کے لئے دل و جان سے نواز شریف کے ساتھ تھے ۔تفصیلات کے مطابق معروف صحافی و کالم نگار رؤف کلاسرا کا اپنے ایک کالم ’شکریہ نواز شریف‘ میں کہنا ہے کہ سابق وزیر داخلہ چودھری نثار کی پریس کانفرنس سنتے ہوئے احساس ہو رہا تھا کہ اس ملک اور خطے میں ذاتی وفاداریاں اس ملک اور دھرتی سے زیادہ اہم ہیں۔

جب پانامہ سکینڈل آیا تو اس وقت چودھری نثار وزیر داخلہ تھے۔ ایک پریس کانفرنس میں نمودار ہوئے‘ اپنے تئیں پانامہ سکینڈل کو مذاق میں اڑانے کی کوشش کی اور فرمایا کہ انہیں تو پتا تک نہیں کہ یہ آف شور کمپنیاں کیا ہوتی ہیں۔

(جاری ہے)

مجھے خود بھی دو تین دن لگے کہ سمجھ سکوں یہ آف شور کمپنیاں کیا ہوتی ہیں، وہ اس وقت نواز شریف کے بچوں کی کرپشن کا دفاع کرتے رہے،چودھری صاحب کا دعویٰ ہے کہ وہ سچ بولتے ہیں،سوال یہ ہے کہ اس سچ کا فائدہ کس کو ہوتا رہا ہے۔

رؤف کلاسرا کا مزید کہنا تھا کہ چوہدری نثار نے بے شک سر عام نواز شریف کی کرپشن کا دفاع کرنا بند کر دیا تھا لیکن اندر کھاتے وہ نواز شریف کو اس سب صورتحال سے بچنے کے مشورے دیتے رہے۔اگر چوہدری نثار واقعی اس ملک اور قوم کا مفاد چاہتے تو وہ اپنی پریس کانفرس میں ہمیں بتاتے کہ انہوں نے نواز شریف اور ن کے خاندان کو عدالتوں سے سزا سے بچنے کے لیے کیا گر سمجھانے کی کوشش کی تھی۔یہ بات واضح ہے کہ چوہدری نثار شریف خاندان کی کرپشن بچانے کے لئے نواز شریف کے ساتھ تھے۔تاہم یہ اس ملک کی خوس قسمتی اور نواز شریف کی بد قسمتی ہے کہ انہوں نے چوہدری نثار کے مشورے پر عمل نہیں کیا،ورنہ جو طریقہ چوہدری نثار نے بتایا تھا اس سے نواز شریف بچ جاتے۔