فیصل آباد، توانائی بحران پانی اور سستی بجلی کیلئے کالا باغ ڈیم کی تعمیر ہی واحد حل ہے، حاجی محمد اصغر

کالا باغ ڈیم تعمیر پر کسی کو سیاست نہیں کرنا چاہیے ، ڈیم کی خلاف بات کرنے والوں ملک دشمن قرار دیا جائے،چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے کسٹم انیڈ ڈرائی پورٹ

اتوار مئی 19:20

فیصل آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) فیصل آبادچیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ا یگزیکٹو ممبر و چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے کسٹم انیڈ ڈرائی پورٹ حاجی محمد اصغر نے چیف جسٹس آف پاکستان ،آرمی چیف اور وزیر اعظم سے اپیل کی ہے کہ وہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر فوری نوٹس لیں توانائی بحران پانی اور سستی بجلی کیلئے کالا باغ ڈیم کی تعمیر ہی واحد حل ہے کالا باغ ڈیم تعمیر پر کسی کو سیاست نہیں کرنا چاہیے ،،کالا باغ ڈیم کی خلاف بات کرنے والوں ملک دشمن قرار دیا جائے۔

میٹرو بس ،ٹرین اور سڑکوں سے زیاد ہ ضرورت توانا ئی بحران کے حل پر ہونی چاہیے تھی مگر افسوس کہ اس طرف کسی نے توجہ ہی نہیںدی، ماہرین آج کہے رہے ہیں آنے والے دنوں میں پانی اور توانا ئی کا بحران مزید شدت اختیار کر چائے گا مگر ہمارے سیاست دانوں نے اقتدار کی لالچ نے ایسے ایشو پر کسی ایک ہوکربات نہیں کی۔

(جاری ہے)

، انہوںنے گرمیوں کی آمد سے قبل یہ بجلی کی صورتحال تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب سمیت ملک بھر میں لوڈشیڈنگ کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے جبکہ ماہرین بھی آگاہ کررہے ہیں کہ ملک میں بجلی کا بحران پھر آنے والا ہے اور ملک کی انڈسٹری پہلے ہی بند پڑی ہے مالک محنت کشوں کے ساتھ سڑکوں پر آنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں اور گرمیوں میں روائتی طور پر بجلی کا استعمال بڑھ جاتا ہے۔

درآمدی کوئلے کی قیمت اور ڈالر کی قدر میںحالیہ اضافے نے کوئلے پر چلنے والے نجی بجلی گھروں کو بند ہونے کے دھانے پر پہنچا دیا ہے اور اگر حکومت نے موجودہ صورتحال کے ازالہ کیلئے فوری اقدامات نہ کئے تو نجی بجلی گھروں کے بند ہونے سے بجلی کی لوڈشیڈنگ سنگین صورتحال اختیار کر جائیگی۔ انہوں نے کہا ہے کہ ملک کو اندھیروں سے نکالنے کیلئے کالا باغ ڈیم کی تعمیر ناگزیر ہے، توانائی کے بحران نے ملک کی معیشت کی بنیادیں ہلا کر رکھ دی ہیں ، کاٹیج انڈسٹری کی پست حالی بیان سے باہر ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں بے شمار وسائل ہونے کے باوجود ملکی معیشت زبوں حالی کا شکار ہے ، ملکی وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے پانی سے سستی ترین بجلی پیدا کی جا سکتی ہے جس کے لئے کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے بہتر کوئی منصوبہ نہیں ہو سکتا جو کہ 5سال کی کم ترین عرصہ کے اندربجلی کی پیداوار حاصل کی جا سکتی ہے انہوں نے کہا کہ گزشتہ نو مہینوں کے دوران درآمدی کوئلے کی قیمت 90 ڈالر سے بڑھ کر 103 ڈالر ہو گئی ہے اسی طرح صرف کوئلے کی قیمت میں 14 فیصد اضافہ ہوا جبکہ ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں بھی دس فیصد کی کمی نے کوئلے پر چلنے والے تمام بجلی گھروں کو غیر منافع بخش کاروباربنا دیا ہے اور اس صورتحال میں یہ بجلی گھرمجبوراً بند ہو جائیں گے جبکہ نیشنل گریڈ اکیلا بجلی کی ملکی ضروریات کو پورانہیں کر سکے گا اور اس کی وجہ سے دوبارہ گھریلو بلکہ صنعتی لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بھی شروع ہو رہا ہے۔