مولوی محمد حنیف سے متعلق جو خبر شائع ہو ئی تھی ان میں کوئی صداقت نہیں ہے،کامران مرتضیٰ

اتوار مئی 19:20

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے سابق صدر ممتاز قانون دان کامران مرتضیٰ نے کہا ہے کہ جمعیت علماء اسلام کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری مولوی محمد حنیف سے متعلق اخبارات میں شائع ہونیوالی عام انتخابات میں ان کی تاحیات نا اہلی میں کوئی صداقت نہیں ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے میڈیا سے بات چیت کر تے ہوئے کیا انہوں نے کہا ہے کہ گزشتہ روز جمعیت علماء اسلام کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری مولوی محمد حنیف سے متعلق جو خبر شائع ہو ئی تھی ان میں کوئی صداقت نہیں ہے یہ ایک منفی پروپیگنڈہ ہے اور مولوی محمد حنیف کی سیاسی ساکھ کو متاثر کرنے کی کوشش کی گئی انہوں نے بتایا کہ جس دن سپریم کورٹ نے سابق وزیراعظم میاں محمد نوازشریف کی تا حیات نا اہلی کا فیصلہ سنایا گیا تھا اس دن ایک نجی ٹی وی اور اگلے روز ایک نیوز ایجنسی نے بھی مولوی محمد حنیف کی نا اہلی سے متعلق خبر چلائی گئی تھی جو کہ بعد میں ان کے موکل مولوی محمد حنیف اور ان کے وکیل سابق چیف جسٹس طارق محمود کی توسط سے سپریم کورٹ سے رابطہ کیا گیا تو سپریم کورٹ کے اس فیصلے نے مولوی محمد حنیف کا کوئی ذکر نہیں تھا اور مولانا محمد حنیف عام انتخابات میں الیکشن لڑ سکتا ہے اور ان پر کوئی پابندی نہیں ہے۔