ڈھاکہ میں او آئی سی وزراء خارجہ کونسل کا 45واں اجلاس اختتام پذیر

مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر متفقہ قرارداد منظور ،کشمیر ی مسلمانوں کی ساتھ اظہار ہمدردی کا اظہار

اتوار مئی 19:40

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) ڈھاکہ میں اسلامی ممالک کی تنظیم (او آئی سی) کے وزراء خارجہ کونسل کا 45واں سیشن ختم ہوگیا ۔ سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے پاکستانی وفد کی قیادت کی۔او آئی سی نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر متفقہ طور پر قرارداد منظور کی۔ اور ممبر ممالک نے کشمیر ی مسلمانوں کی ساتھ اظہار ہمدردی کا اظہار کیا۔

قرارداد میں کہا گیا ہے کہ اسلامی ممالک مظلوم کشمیریوںکی حق خود ارادیت کی حمایت کرتے ہیں اور مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جائے۔ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی جانب سے منظم ظلم وستم کو بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی قراردیا گیا۔ او، آئی، سی کے سیکرٹری جنرل کو مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے مظالم اور کشمیریوںکی جدوجہد کے بارے میں تفصیلی رپورٹ پیش کی گئی۔

(جاری ہے)

سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے اجلاس کے دوران نہتے کشمیریوں پر ہونے والے مظالم کے بارے میں کونسل کے ممبران کو آگاہ کیا۔انہوںنے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو سفارت کاری کے ذریعے حل کیاجاسکتا ہے۔اس سلسلے میں بین الاقوامی برادری کو بھی اپنا کردار اد اکرنا چاہیے۔ سیکرٹری خارجہ نے روہنگیا اور فلسطین کے مسلمانوں کیلئے پاکستان کی طرف سے مکمل تعاون کا یقین دلایا۔

کانفرنس کے اختتام پر ڈھاکہ اعلامیہ جاری کیا گیا، جس میں کشمیر، روہنگیا،، فلسطین اور دیگر ممالک کے مسلمانوں کی بلاتفریق مکمل حمایت کرنے کا اعادہ کیا گیا ۔ دفترخارجہ سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق کانفرنس کے دوران سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے سائیڈ لائن ملاقاتوں میں سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر ، سینیگال، اور یوگینڈ ا کے وزرائے خارجہ سے ملاقات کے علاوہ مراکو، ملائیشیا ، تیونس ، انڈونیشیاکے سیکرٹری خارجہ کے ساتھ بھی ملاقاتیں کیں۔ انہوںنے او، آئی، سی کے متعدد ممبر ممالک کے سربراہان سے بھی ملاقاتیں کی۔۔۔۔۔۔۔۔۔شمیم محمود،