کوئٹہ کان حادثے میںجاں بحق ہونے والے شانگلہ سے تعلق رکھنے والے 23کان کن سپردخاک

اتوار مئی 20:00

شانگلہ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) کوئٹہ کوئلہ کان حادثے میں شانگلہ سے تعلق رکھنے والے 23کان کن جاں بحق جبکہ 7افراد زخمی ہوگئی- میتوں کو شانگلہ پہنچادیا گیا،اجتماعی نماذ جنازوں کے بعد سپردخاک کردیئے گئی-تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے علاقے مارواڑ مارگٹ اور سپین کاریزپی ایم ڈی سی میں کوئلے کی کان میں گیس بھرجانے سے زوردار دھما کے ہوئے جس کی وجہ سے تین کان بیٹھ گئی، حادثات میں جاں بحق ہونے والے محنت کشوں کا تعلق شانگلہ سے ہے ۔

ہفتہ کے عصربلوچستان کے دو مختلف علاقوں میں بایک وقت کوئلہ کانوں میں دھماکے ہوئے پہلا دھماکہ بلوچستان کے دارولحکومت کوئٹہ سے ساٹھ کلومیٹر کے مسافت پر واقع مارواڑ مارگٹ میںتین کان بیٹھ جانے سے 16 کان کن جاں سے ہاتھ دھو بیٹھے جبکہ اسی حادثوں میں 7 محنت کش ساندہ گیس سے زخمی ہوگئے ہیں۔

(جاری ہے)

دوسرا حادثہ بھی بلوچستان کے دور رفتا علاقہ کاریز پی ایم ڈی سی میں ہوا جس کے نتیجے میں 7کان کن جاںبحق ہوگئے ہیں۔

مارواڑ کاریز حادثات میں زخمیوں کو کوئٹہ کے سول ہسپتال منتقل کردیاگیا ہے۔شانگلہ سے رکن قومی اسمبلی ڈاکٹرعباداللہ جائے حادثہ پہنچ گئے۔ انتظامیہ کی طویل کوششو ں کے بعد میتوں کو کان سے نکالا گیا جن کو آبائی علاقوں میں اجتماعی نماز جنازوں کے بعد سپردخاک کر دیاگیا ۔ مارواڑ مارگٹ کائلہ کان جاں بحق ہونے والوں میں عبداللہ، عبدالحق پسران عبدالقیوم،لیاقت علی ولد خان زادہ،رحیم ولد بخت زر،جاوید ولد محمد علی،نصراللہ ولدجہان ملک،محمد وحیدولدقب،حضرت نبی ولد گل وہاب،فوجون ولد شیر افضل،محمدخالدولدشیرمحمد،عبدالطیف ولداکرام اللہ،نصیب اللہ ولد علی،جہان زر ولداضرخان،دلاورولددلبرخان ان سب محنت کشوں کا تعلق زڑہ ،شلائوو،دولو یونین کونسل ڈھیری سے ہیں جبکہ کاریز پی ایم ڈی سی میں کائلہ کان جاں بحق ہونے والوں میں گل فرین ولد روزر،شیربازولددواخان،فیاض ولدمحمدشیر،خان بادشاہ ولدفاتح مند،ابراہیم ولد جمشید،عبدالحلیم ولد شہاب الدین،،منور ولد دلاور شامل ہیں جبکہ زخمیوں میں بخت زمان ولد باروز،انعام الحق ولد محمد منیر،گل نیروزولدگل محمد،ممتاب شامل ہیں جس کی حالت خاطر ے سے باہر بتائی جارہی ہے۔