جنوبی چینی سمندر میں امریکی فوجی تنصیبات پر چین کی تشویش

چین نے تباہ کن کروز میزائل اور زمین سے فضاء میں مار کرنے والا نظام نصب کر رکھا ہے چین پر حملہ کرنے والا ہر دشمن جنوبی چینی سمندر کے راستے ہی آیا ہے، سیاسی مبصر ین

اتوار مئی 20:30

بیجنگ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) جنوبی چینی سمندر میں امریکی فوجی تنصیبات پر چین کو بہت تشویش ہے کیونکہ اس علاقے پر قبضہ کرنے کی ہر کوشش چینی علاقے کے خلاف ہوگی جبکہ دوسری طرف وائٹ ہائوس نے الزام لگایا ہے کہ چین اس علاقے میں اپنی فوجی طاقت میں اضافہ کر رہا ہے اور اس نے اس علاقے میں تین مقامات پر میزائل نصب کر رکھے ہیں ۔ایک سیاسی مبصر بلنگٹن کا کہنا ہے کہ امریکہ چین پر وہاں فوجی طاقت بڑھانے کا الزام دیتا ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ امریکہ اور اس کے اتحادی باقاعدگی کیساتھ اس علاقے میں جنگی بحری جہاز اور طیارہ بردار جہازوں کے علاوہ جنگی سامان بھی جنوبی چینی سمندر میں پہنچا رہے ہیں ۔

چینیوں کو جنوبی چینی سمندر کے دفاعی حکمت عملی کے سلسلے میں کئی خدشات ہیں کیونکہ چین پر حملہ کرنے والا ہر دشمن جنوبی چینی سمندر کے راستے ہی آیا ہے ۔

(جاری ہے)

سی این بی سی نیوز نے امریکی انٹیلی جنس کے حوالے سے بتایا ہے کہ چین نے اس علاقے میں تباہ کن کروز میزائل اور زمین سے فضاء میں مار کرنے والا نظام بھی نصب کر رکھا ہے جبکہ تین مقامات پر میزائل بھی نصب کئے گئے ہیں ۔

امریکہ اس علاقے میں جہاز رانی کی آزادی کو یقینی بنانے کے نام پر مداخلت کرتا ہے حالانکہ اس سمندری علاقے سے زیادہ تر جہاز رانی چین اور اس کے اتحادیوں کی ہوتی ہے اس لئے جہاز رانی کی آزادی کی سب سے زیادہ ضرورت چین کو ہی ہے ۔ جنوبی چینی سمندر بین الاقوامی سمندری تجارت کا دروازہ ہے جس سے ہر سال 3.4ٹریلین تجارت ہوتی ہے ،ویتنام ،تائیوان ، فلپائن ، ملائشیا اور برونائی کی تجارت کا بھی یہ بڑا ذریعہ ہے ۔

متعلقہ عنوان :