رمضان المبارک2018 سیکیورٹی/ٹریفک پلانز کی ترتیب میں تمام اسٹیک ہولڈرز سے مشاورت کو ترجیح دی جائے،آئی جی سندھ

اتوار مئی 20:30

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ نے پولیس کو ہدایات جاری کی ہیں کہ تمام مساجد امام بارگاہوں مدارس نماز اور تروایح کے دیگر کھلے مقامات کی فہرستوں کا جائزہ لیکرپولیس رینج ڈسٹرکٹس اور زونز کی سطح پر فول پروف سیکیورٹی/ٹریفک پلانز کی ترتیب کو یقینی بنایا جائے تاکہ رمضان المبارک کے دوران عوام کے جان ومال کے تحفظ کے ساتھ ساتھ ٹریفک مینجمنٹ نظام کو بھی غیرمعمولی بنایا جاسکے۔

آئی جی سندھ نے کہا کہ سیکیورٹی پلان کو حتمی شکل دینے سے قبل پاکستان رینجرز سندھ قانون نافذ کرنیوالے دیگر اداروں سے تمام تر ضروری مشاورت اور تعاون جیسے امور کو بھی یقینی بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی پلان کی ترتیب میں کرائم انالیسز اور ملک کے دیگر صوبوں میں امن وامان کی صورتحال اور اس سے متعلق واقعات کو بھی سامنے رکھا جائے اور بعداذاں اس تناظر میں انتہائی حساس حساس اور نارمل درجہ بندیوں پر مشتمل فول پروف سیکیورٹی پلان تیار کیا جائے تاکہ رمضان المبارک کے تینوں عشروں بشمول یوم علی? طاق راتوں/ شب قدر کے موقع پر تمام تر حفاظتی اقدامات کو غیرمعمولی بنایا جاسکے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ سیکیورٹی پلان کے تحت تینوں عشروں میں پولیس کمانڈوز کو بھی خصوصی ذمہ داریاں تفویض کی جائیں جبکہ تین پانچ دس اور پندرہ روزہ تراویح کے مقامات پر متعلقہ ایس ایس پیز ایس ڈی پی اوز کی نگرانی کے تحت ناصرف فول پروف سیکیورٹی بلکہ منتظمین کی معاونت سے کڑی نگاہ رکھنے جیسے اقدامات کو بھی یقینی بنایا جائے۔آئی جی سندھ نے کہا کہ ٹیکنیکل سوئپنگ کلیئرینس ایڈوانس انٹیلی جینس کلیکشن شیئرنگ رینڈم اسنیپ چیکنگ پکٹنگ پیٹرولنگ ناکہ بندی سرچنگ نمایاں پولیس ڈپلائمنٹ پولیس آپریشنز میں تیزی لانے سمیت مفرور اور اشتہاری/مطلوب ملزمان کی گرفتاریوں جیسے جملہ امور کو بھی رمضان المبارک سیکیورٹی پلان کی حکمت عملی اور لائحہ عمل میں باالخصوص فوقیت دی جائے۔

آئی جی سندھ نے کہا کہ رمضان المبارک سیکیورٹی پلان میں صوبے کے تمام اہم سرکاری نیم سرکاری دفاتر عمارتوں حساس تنصیبات قونصل خانوں اقلیتی برادری کے مذہبی مقامات تمام پبلک مقامات وغیرہ پر سیکیورٹی تفصیلات کا بھی احاطہ کیا جائے علاوہ اذیں پولیس افسران اور جوانوں کو سیکیورٹی فرائض پر بریفنگ سمیت جملہ سیکیورٹی اقدامات میں شہریوں کے ہرممکن تعاون جیسے امور کو بھی پلان کا حصہ بنایا جائے۔

علاوہ اذیں انہوں نے مذید کہا کہ ٹریفک پلان کی تیاری میں بھی تمام اسٹیک ہولڈرز ٹرانسپورٹر برادری اور انکی دیگر نمائندہ تنظیموں سے شیڈول اجلاس کو ممکن بنایا جائے تاکہ ٹریفک کی روانی اور سڑکوں پر ٹریفک کی صورتحال کو بہتر بناکر رمضان المبارک کے دوران ٹریفک کو پلا تعطل رواں دواں رکھا جاسکے۔#