جمعیت علماء اسلام پارلیمنٹ کو سپریم لا ء سمجھتی ہے، مولانا عبد الغفور حیدری

انتخابات کا بر وقت ہونا ملک کی بہتر و محفو ظ مستقبل کے لئے ضروری ہے انتخابات کی التوا سے ملک میں افرا تفری پیدا ہوگی جمہوریت سے راہ افرار اختیار کرنے کا مطلب ملک کی آئین و تشخص سے انکار کرنا ہے، خطاب

اتوار مئی 20:31

خضدار (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 06 مئی2018ء) جمعیت علما ء اسلام پاکستان کے جنرل سیکر ٹری مولانا عبد الغفور حیدری نے کہا ہے کہ جمعیت علماء اسلام پارلیمنٹ کو سپریم لاء سمجھتی ہے انتخابات کا بر وقت ہونا ملک کی بہتر و محفو ظ مستقبل کے لئے ضروری ہے انتخابات کی التوا سے ملک میں افرا تفری پیدا ہوگی جمہوریت سے راہ افرار اختیار کرنے کا مطلب ملک کی آئین و تشخص سے انکار کرنا ہے جمعیت علماء اسلام ملک میں جمہوریت کی استحکام پر یقین رکھتی ہے ہم کسی بھی ایسی سازش کا کھل کر مخالفت کریں گے جس سے جمہوریت کمزور ہو ،اداروں کو اپنی حددود میں رہ کر کام کرنا چاہیئے ، جمعیت علماء اسلام کی سیاست احیا دین کے لئے ہے مدارس اسلامیہ مسلمانوں کے اخلاق و عقیدہ کی حفاظت کرنے والے ادارے ہیں قوم نے ہمیشہ ان اداروں پر غیر متزلزل اعتماد کا اظہار کیا یہاں سے نکلنے والے سیاسی زعما کا دامن کرپشن و ملک کو لوٹنے والوں میں نہیں آیا مستونگ میں پیش آنے والا واقعہ افسوسنا ک تھا لیکن اس طرح کے بزدلانہ حملوں سے ہمارا راستہ نہیں روکا جا سکتا ہے جمعیت علماء اسلام کی سیاسی تاریخ شہادتوں سے بھری پڑی ہے راہ حق میں جانوں کے نذرانہ پیش کرنے والے قوموں کو نئی زندگی فراہم کرتے ہیں جمعیت علماء اسلام اپنے شہدا کی خون سے بلوچستان سمیت پورے ملک میں اسلامی نظام کی بہاریں قائم کریگا متحدہ مجلس عمل کے زیر اہتمام منگچر میں منعقد ہونے والاشہداء اسلام کانفرنس بلوچستان کی سیاست میں نئی تبدیلی کی سبب بنے گی مینار پاکستان لاہور میں 13 مئی کو ہونے والے ملک گیر کانفرنس میں متحدہ مجلس عمل اپنے ایجنڈا کو قوم کے سامنے پیش کریگی وقت آگیا ہے کہ ملک کی سیاست بے دینی بے راہ روی کرپشن کا خاتمہ کیا جائے قوم کی نظریں ہماری قیادت پر لگی ہوئی ہیں ہمارے راستے میں رکاوٹیں ڈالنے والوں کو ملک کی مستقبل کا فکر کرنا ضروری ہے آ خر وہ کب تک لوگوں کی رایہ کو دباتے رہیں گے ان خیالا ت کا اظہار مولانا عبد الغفور حیدری نے جمعیت علماء اسلام ضلع خضدار کے مجلس شوری کے اجلاس جامعہ مدنیہ زاہدآباد خضدار کے سالانہ جلسہ دستار بندی سے خطاب کرتے ہوئے کیا