0بالز کرکٹ فارمیٹ پر غلط بیانی سے انگلش کر کٹ بورڈ پھنس گیا

انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ نے دعویٰ کیا تھا کہ انہوں نے مینز اور ویمنز سینئر کرکٹرز سمیت کئی شخصیات سے مشاورت کی انگلینڈ بورڈ نے صرف 3کرکٹرز سے بات کی،انکشاف۔۔صورتحال کو معمول پر لانے کیلئے اہم اجلاس(آج)ہوگا

پیر مئی 15:40

لندن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ 2020 سے 100بالز فی اننگزکا نیا فارمیٹ متعارف کرانے کی ٹھان چکاہے لیکن اس حوالے سے اس کی غلط بیانی سامنے آجانے سے ای سی بی کو سخت تنقید کا سامناہے ۔ کائونٹی حکام اور درجنوں کرکٹرز بورڈ حکام کی غلط بیانی پر ناراض ہیں ، جن کی طرف سے مختلف انداز میں تنقید اور احتجاج بھی سامنے آرہاہے۔

صورتحال کو معمول پر لانے کیلئے ای سی بی کے عہدیدار(آج) منگل کو 100بالز ٹورنامنٹ کے حوالے سے اہم اجلاس کرنے جارہے ہیں، جہاں پلیئرز ایسوسی ایشنز، کائونٹی حکام اور متعدد کرکٹرز کی جانب سے شدید رد عمل کا سامنا ہوسکتا ہے۔2020سے 100بالز ٹورنامنٹ کے اعلان کے موقع پر ای سی بی حکام نے دعوی کیا تھا کہ اس حوالے سے مینز اور ویمنز سینئر کرکٹرز سمیت کئی شخصیات سے مشاورت کی گئی، مگر اب انکشاف ہوا ہے کہ انگلینڈ بورڈ نے اس معاملے پر صرف 3کرکٹرز سے بات کی، ان میں محدود اوورز ٹیم کے کپتان اوئن مورگن، ویمن کپتان ہیتھر نائٹ اور ووسٹر شائر کے سابق کرکٹر اور موجودہ پروفیشنل کرکٹرز ایسوسی ایشن کے چیئر مین ڈیرل مچل شامل ہیں۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ 100بالز فی اننگز کے میچوں میں پہلی 90 بالز موجودہ قوانین کے مطابق 15 اوورزمیں پھینکی جائیں گی جس میں ہر اوور چھ بالز کاہوگا تاہم اس کے باوجود سولہواں اوور چھ کے بجائے دس گیندوں پر مشتمل ہوگا۔

متعلقہ عنوان :