وزیر اعظم پاکستان زلزلہ متاثرین کی رقم آزادحکومت کو دیں‘ پیر غلام مرتضیٰ گیلانی

پیر مئی 19:12

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) آل جموںوکشمیر مسلم کانفرنس مرکز ی رہنما وسابق وزیر حکومت پیر سید غلام مرتضیٰ گیلانی نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت جاتے جاتے آخری ایام میں متاثرین زلزلہ کا 55ارب روپے واپس کریں ،2005کے زلزلہ میں بین الاقوامی ممالک سے ملنے والے رقم جو متاثرین زلزلہ کی آبادی کے لیے استعمال ہونی تھی جو کہ اُس وقت کی وفاقی حکومت نے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام میں منتقل کیا تھا ،آزادکشمیر کے موجودہ وزیر اعظم راجہ فاروق حید ر خان جب اپوزیشن لیڈر تھے تو انہوں نے وعدہ کیا تھا کہ ہم جب اقتدار میں آئیں گے اور وفاقی میں ہماری حکومت ہے ہم زلزلہ متاثرین کی رقم واپس لیں گے لیکن وقافی کے آخری ایام ہیں مگر اس وقت تک نہ تو وہ وعدہ وفا ہو سکا اور نہ ہی زلزلہ متاثرین کی اچھی طرح آباد کاری ہوسکی ۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم پاکستان زلزلہ متاثرین پر رحم کھاتے ہوئے متاثرین کی رقم آزادحکومت کو دیں تاکہ آزادحکومت متاثرین کی بحالی کے لیے اقدامات کریں گے ،وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان اقتدار سے پہلے بلند وبانگ دعوے کرتے تھے کہ ہم زلزلہ متاثرین کی رقم واپس کرائیں گے اس کے لیے ہمیں کیوں نہ لانگ مارچ کرنی پڑی اب حکومت کو دوسال مکمل ہونے کو ہیں اور پاکستان میں اب ان کی حکومت کے آخری دن ہیں لیکن آج تک نہ ہی رقم واپس آسکی اور نہ ہی اُس رقم کے لیے کوئی لانگ مارچ ہوئی انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت آزادکشمیر میں الیکشن جتنے کے بعد سابق وزیر اعظم میاں محمد نوازشریف نے یونیورسٹی گرائونڈ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آزادکشمیر میں موٹروے آئے گی ،ہسپتالوں کے جھال بچھائیں گے ،مظفرآباد سے راولپنڈی تک ریلوے ٹریک بچھائیں گے بڑے بڑے وعدے کشمیریوں عوا م کے ساتھ کر کے گے آج تک اُن میں سے کوئی ایک وعدہ پوراانہیں ہو۔

آزادکشمیر کی عوام کو وفاقی حکومت نے بیوقوف سمجھ رکھا ہے ہم کشمیری عوام سے دھوکہ نہیں ہونے دینگے کشمیری عوام کی ہر مشکل گھڑی میں ان کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کے پاس ابھی بھی وقت ہے کہ وہ وفاق سے زلزلہ متاثرین کے 55ارب روپے واپس کروائیں ورنہ آزادکشمیر کے اندر ان کی کوئی اہمیت نہیں رہے گی۔ہم چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار سے مطالبہ کرتے ہیں کہ جس طرح انہوں نے بالا کوٹ کے متاثرین زلزلہ کے مسائل کی طرف توجہ دی وہ اسی طرح آزادکشمیر کے متاثرین زلزلہ کے 55ارب روپے کی واپسی کا اعلان کروائیں تاکہ کشمیریوں کو اپنا حق مل سکے۔