احسن اقبال پر حملہ افسوسناک ہے ،ْ ایسے اصولوں کا تعین کر نا ہوگا جن پر سیاست نہیں ہوسکتی ،ْ مریم اور نگزیب

تھیلیسیمیا ایک خطرناک مرض ہے ،ْتھیلیسیمیا کیخلاف صوبائی حکومتیں ایمرجنسی نافذ کریں ،ْپارلیمنٹ تھیلیسیمیا کے تدارک کیلئے قانون سازی کرے ،ْ وزیر اطلاعات تقریب سے خطاب ،ْمیڈیا سے بات چیت

پیر مئی 19:45

احسن اقبال پر حملہ افسوسناک ہے ،ْ ایسے اصولوں کا تعین کر نا ہوگا جن ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) وزیر اطلاعات و نشریات مریم اور نگزیب نے کہا ہے کہ احسن اقبال پر حملہ افسوسناک ہے ،ْ ایسے اصولوں کا تعین کر نا ہوگا جن پر سیاست نہیں ہوسکتی ،ْ۔میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے وزیر اطلاعات و نشریات مریم اور نگزیب نے کہاکہ وزیر داخلہ احسن اقبال پر حملہ افسوسناک واقعہ ہے ،ْاحسن اقبال کا گھرانہ مذہبی ہے، انکے خیالات پورا ملک جانتا ہے ۔

انہوںنے کہاکہ احسن اقبال نے ہمیشہ ملکی ترقی کی بات کی ہے ،ْاحسن اقبال پاکستان کے عوام سے محبت کرتے ہیں ،ْپورے ملک نے وزیر داخلہ پر حملے کی مذمت کی ہے ،ْہم احسن اقبال کی جلد صحت یابی کیلئے دعاگو ہیں۔ مریم اورنگزیب نے کہا کہ ایسے اصولوں کا تعین کرنا ہو گا جن پر سیاست نہیں ہو سکتی۔

(جاری ہے)

مریم اور نگزیب نے کہاکہ سکیورٹی اور پروٹوکول جان کی حفاظت کے لیے ہوتی ہے۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ حکومت نے بڑی کامیابی سے دہشتگردی کیخلاف جنگ لڑی ۔۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ 2018کے انتخابات وقت پر ہوں گے ۔ بعد ازاں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مریم اور نگزیب نے کہاکہ تھیلیسیمیا ایک خطرناک مرض ہے ،ْتھیلیسیمیا کیخلاف صوبائی حکومتیں ایمرجنسی نافذ کریں۔وزیراطلاعات نے کہاکہ تھیلیسیمیا جیسی بیماری پرکوئی سیاست نہیں ہونی چاہیے انہوںنے کہاکہ پارلیمنٹ تھیلیسیمیا کے تدارک کیلئے قانون سازی کرے ،ْخاندان میں شادیاں تھیلیسیمیا کے پھیلاؤ کا سبب ہیں ،ْعوامی شمولیت کے بغیر موذی امراض پرقابو نہیں پاسکتے۔

وزیراطلاعات نے کہا کہ تھیلیسیمیا جیسی بیماری کیخلاف آگہی مہم شروع کررہے ہیں ،ْانسانی جان بچانے کیلئے حکومت کے بازوبنیں ،ْانسانی جان بچانے کیلئے ہرشخص اپنا حصہ ڈالے۔۔مریم اورنگزیب نے کہاکہ خون کے عطیات کیلئے ہرممکن تعاون کرینگے۔انہوںنے کہاکہ بیت المال کی سطح پربھی معاونت فراہم کرینگے ،ْصحت پروگرام اپنی نوعیت کا منفرد منصوبہ ہے۔۔مریم اورنگزیب نے کہاکہ انفرادی حیثیت میں اس کارخیرمیں شریک ہونا چاہیے ،ْچھوٹی عمرمیں شادیاں کرنیوالے والدین سوچیں۔وزیراطلاعات نے کہاکہ والدین کے فیصلے زندگی بناتے اورضائع کرسکتے ہیں ،ْموثر اقدامات سے آنیوالی نسلوں کو موذی مرض سے بچایا جاسکتا ہے۔