لاڑکانہ ،ْتیسری جماعت کا طالب علم ذہنی معذوری میں مبتال ،والدین مخیر حضرات سے مدد کی اپیل

پیر مئی 20:03

لاڑکانہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) لاڑکانہ شہر کے عاقل روڈ کے رہائشی محنت کش غلام مصطفیٰ بھٹو کا 11 سالہ بیٹا اور تیسری جماعت کا طالبعلم غلام مرتضیٰ گذشتہ پانچ سالوں سے ذہنی معذوری کی بیماری میں مبتلا ہے جس کے علاج میں مدد کے لیے والدین نے بیمار بچے کے ہمراہ پریس کلب کے مدد کے لیے اپیل کرتے ہوئے بتایا کہ پانچ سال قبل غلام مرتضیٰ بھٹو تیسری جماعت میں زیر تعلیم تھا جس دوران اسے شدید بخار ہوا جس کے بعد وہ مسلسل ذہبی معذور کی بیماری میں مبتلا ہے، غربت کے باعث علاج نہ کروانے کی وجہ سے اس کی صحت دن بہ دن خراب ہوتی جا رہی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایا کہ ہم غریب ہیں اس وقت بھی کرایے کے مکان میں رہائش پذیر ہیں، روزانہ محنت مزدوری کرکے دو وقت کی روٹی مشکل سے کھاتے ہیں جبکہ کراچی کے ڈاکٹروں نے علاج پر 15 لاکھ روپیوں سے زائد رقم کی تخمینہ لگایا ہے اتنی سکت نہیں کہ بیمار بچے کا مکمل علاج کرواسکیں۔ غلام مرتضیٰ بھٹو کے والدین نے چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری،، ایم این اے فریال تالپور،، وزیراعلیٰ سندھ اور مخیر حضرات سے اپیل کی کہ بچے کا سرکاری سطح پر مفت علاج کرکے اس کی زندگی بچالی جائے۔