بھارت، زیادتی کے بعد زندہ جلا دینے کے واقعات میںاضافہ

سالہ لڑکی کو زیادتی کے بعد زندہ جلا دیا گیا، ملزم لڑکی سے شادی کا خواہشمند تھا لیکن لڑکی راضی نہ تھی، پولیس حکام

پیر مئی 21:36

جھاڑکھنڈ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) بھارت میں زیادتی کے بعد زندہ جلا دینتے کے واقعات میں گراں قدر اضافہ ہو گیا، ایک اور `17سالہ لڑکی کو زیادتی کے بعد زندہ جلا دیا گیا،ملزم لڑکی سے شادی کا خواہشمند تھا لیکن لڑکی راضی نہ تھی۔۔بھارتی میڈیا کے مطابق جب سے بھارتی کابینہ نے ریپ کرنے والے شخص کو سزائے موت دینے کی تجویز کی منظوری دی ہے واقعات کنٹرول کی بجائے بڑھ گئے ہیں۔

بھارتی ریاست جھارکھنڈ کی پولیس کے مطابق ایک 17 سالہ لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد جلا دیا گیا ہے اور اب اس کی حالت انتہائی تشویش ناک ہے۔یہ واقعہ ضلع پاکور میں پیش آیا ہے اور پولیس نے ایک مقامی نوجوان کو اس سلسلے میں حراست میں بھی لے لیا ہے۔خیال رہے کہ جھارکھنڈ میں حالیہ دنوں میں اس نوعیت کا دوسرا واقعہ ہے جس میں کسی لڑکی کو ریپ کے بعد جلایا گیا ہو۔

(جاری ہے)

اس سے قبل بھی ایک نوجوان لڑکی کو جنسی زیادتی کے بعد آگ لگا دی گئی تھی اور اس نے اتوار کو زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ دیا تھا۔ابھی پولیس نے یہ نہیں بتایا کہ ان دونوں واقعات کا آپس میں کوئی تعلق ہے یا نہیں۔۔پولیس کا کہنا ہے کہ حالیہ کیس میں متاثرہ لڑکی کا 95 فیصد جسم جھلس چکا ہے اور وہ زیر علاج ہیں۔۔پولیس افسر شالندرا برنوال کا کہنا ہے کہ ملزم کا کہنا ہے کہ وہ لڑکی سے شادی کرنا چاہتا تھا لیکن وہ راضی نہیں تھی۔ملزم لڑکی کے گھر کے قریب ہی رہتا تھا اور اس کے مطابق اس نے لڑکی پر اس وقت حملہ کیا جب وہ اپنے عزیزوں کے گھر میں موجود تھی۔