مکہ معظمہ،پبلک ٹیکسی سروس پر پابندی لگانے کا فیصلہ،سعودی وزارت مواصلات

پابندی’’اجرة الحرم‘‘ نامی اعلی درجے اوراسپیشل الحرم ٹیکسی سروس کو کامیاب بنانے کے لئے کیا گیا،سربراہ پبلک ٹرانسپورٹ رمیح الرمیح

پیر مئی 21:36

مکہ معظمہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) مکہ معظمہ کے نواح میں پبلک ٹیکسی سروس پر پابندی لگانے کا فیصلہ کر لیا گیا،پابندی’’اجرة الحرم‘‘ نامی اعلی درجے اوراسپیشل الحرم ٹیکسی سروس کو کامیاب بنانے کے لئے کیا گیا۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق سعودی عرب کی وزارت مواصلات نے مکہ مکرمہ میں مسجد الحرام کے گرد ونواح عام ٹیکسی سروس پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔

(جاری ہے)

یہ اقدام اس لئے اٹھایا گیا تاکہ 6 ماہ بعد مسجد الحرام کے اطراف ’’اجرة الحرم‘‘ کے نام سے اعلی درجے اور موثر نوعیت کی اسپیشل الحرم ٹیکسی سروس کو کامیاب بنایا جا سکے۔۔حرم شریف کے علاقے میں الحرم ٹیکسی کے سوا کسی بھی ٹیکسی کو آنے جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ پبلک ٹرانسپورٹ کے سربراہ رمیح الرمیح نے مقامی روزنامہ ""مکہ"" سے گفتگو میں کہا کہ یہ منصوبہ 6 ماہ کے اندر نافذ کر دیا جائے گا۔ اس سے ضیوف الرحمان ،حجاج اور معتمرین بڑے پیمانے پر فائدہ اٹھائیں گے۔