نمیاں صاحب خلائی مخلوق پانامہ میں تلاش کریں، اٴْن پر کالا دھن چھپانے والی خلائی مخلوق نے کیا،محمد علی درانی

میاں صاحب کی نااہلی پاکستانی پارلیمنٹ تو کیا ، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی بھی اب ختم نہیں کرسکتی،ہاو،ْس آف شریف ‘کے خلاف معلوم ذرائع سے زائد اثاثہ جات ، منی لانڈرنگ ،لوٹ مار پر ایف آئی آراقوام متحدہ کے قانون کے تحت درج ہوئی نمیاں صاحب انتظار کریں، برطانیہ، امریکہ،دیگر ممالک میں ناجائز اثاثوں، منی لانڈرنگ کے مقدمات میں اٴْن کے خلاف کاروائی ہونے جارہی ہے نسابق وفاقی وزیر اطلاعات ونشریات محمد علی درانی کا میاں نوازشریف کے خلائی مخلوق کے حوالے سے بیان پر تبصرہ

پیر مئی 21:43

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) سابق وفاقی وزیر محمد علی درانی نے میاں نوازشریف سے کہا ہے کہ خلائی مخلوق پانامہ میں تلاش کریں۔ اٴْن پر حملہ پانامہ کی کالا دھن چھپانے والی خلائی مخلوق نے کیا ہے۔ ووٹ سے ناہلی کے فیصلے کو بدلنے کے بیان پر پیرکومیڈیا سے گفتگو میں تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ میاں صاحب کی نااہلی پاکستانی پارلیمنٹ تو کیا ، اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی بھی اب ختم نہیں کرسکتی۔

اٴْنہیں معلوم ہونا چاہئے کہ ’ہا?س آف شریف ‘کے خلاف معلوم ذرائع سے زائد اثاثہ جات رکھنے ، منی لانڈرنگ اور لوٹ مار پر ایف آئی آراقوام متحدہ کے قانون کے تحت درج ہوئی۔ کرپشن کے خلاف اقوام متحدہ کا کنونشن مجریہ 2003ئ وہ قانون ہے جس کانشانہ میاں نوازشریف بنے ہیں۔

(جاری ہے)

میاں صاحب انتظار کریں۔ برطانیہ،، امریکہ سمیت دنیا کے دیگر ممالک میں ناجائز اثاثوں اور منی لانڈرنگ کے مقدمات میں ان کے خلاف کاروائی ہونے جارہی ہے۔

محمد علی درانی نے کہاکہ جنوری 2018ئ سے برطانیہ میں مشکوک آمدن کے خلاف قانون لاگو ہوچکا ہے۔ پاکستان حکومت نہ بھی چاہے تو بھی نوازشریف اور ان کے خاندان کی لندن میں موجود املاک کی تحقیق ہونا لازم ہے۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ پینتیس سال سے لوٹ مار کی دولت اور حکمرانی کا رشتہ جاری ہے۔حکمرانی کا حق صرف لٹیروں کو ہے اور شوگرمافیا اور لینڈ مافیا اٴْن کے دست وبازوہے۔

جنہیں یہ حکمران اپنے دائیں بائیں بٹھاتے ہیں۔ یہ ’مافیاکنسورشیم‘ اپنے انجام کی طرف بڑھ رہا ہے۔ سابق وزیر اطلاعات نے کہاکہ ترقی یافتہ ممالک فیصلہ کرچکے ہیں کہ ترقی پذیر ممالک کے لٹیرے لیڈروں اور کالی دولت پر سیاست کرنے والوں سے غریبوں کی دولت اور حق حکمرانی چھین لیاجائے۔ محمد علی درانی نے کہاکہ سیاست میں پیسے کے کلچر اور جماعتوں میں خاندانی اور شخصی آمریتوں نے عام پاکستانی کو مکمل مایوس کردیا ہے۔

یہ مایوسی عوام میں اشتعال پیدا کررہی ہے جو انہیں دہشت گردی اور انتہائی اقدامات کی طرف دھکیل کا باعث بن رہی ہے۔ریاست پاکستان فیصلہ کرے کہ لٹیروں، لینڈ مافیا، شوگر مافیا اور کالادھن رکھنے والوں کو اقتدار نہیں دیا جائے گا۔ مسائل کا حل چاہتے ہیں تو آمدن سے زائد اثاثوں کے مالکان کو سیاست سے بے دخل کرنا ہوگا۔ کالے دھن کے زور پر حکومت کو یرغمال بنانے کا راستہ روکنا ہوگا۔ کالے دھن والوں کو دائیں بائیں بٹھانے والوں کی سیاست بھی اب نہیں چلے گی۔ن