کریڈٹ لینے کی بجائے پی ٹی ایم کے جائزمطالبات تسلیم کئے جائیں،اسفندیارولی خان

فاٹا کو جلد کے پی میں ضم کیا جائے، الیکشن کمیشن کو حکم دیں کہ فاٹا کیلئے صوبائی اسمبلی کے حلقے مختص کرے،صوبائی اسمبلی میں فاٹا کونمائندگی نہیں دی گئی تو ذمہ دارن لیگ حکومت ہوگی ،اے این پی کے سربراہ کاپشاورمیں جشن خیبرپختونخوا تقریب سے خطاب

پیر مئی 21:59

کریڈٹ لینے کی بجائے پی ٹی ایم کے جائزمطالبات تسلیم کئے جائیں،اسفندیارولی ..
پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) عوامی نیشنل پارٹی کے سربراہ اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ اس وقت کریڈٹ لینے کی بجائے پی ٹی ایم کے جائزمطالبات تسلیم کئے جائیں، فاٹا کو جلد کے پی میں ضم کیا جائے، الیکشن کمیشن کو حکم دیں کہ فاٹا کیلئے صوبائی اسمبلی کے حلقے مختص کرے،،صوبائی اسمبلی میں فاٹا کونمائندگی نہیں دی گئی تو ذمہ دارن لیگ حکومت ہوگی ۔

(جاری ہے)

پشاورکے باچا خان مرکز میں جشن پختونخوا کی تقریب سے خطاب میں اسفندیار ولی خان کا کہنا تھا کہ فاٹا کوجلدازجلد کے پی میں ضم کیاجائے،،صوبائی اسمبلی میں جلد فاٹا کو نمائندگی دی جائے،،الیکشن کمیشن کو حکم دیں کہ فاٹا کیلئے صوبائی اسمبلی کے حلقے مختص کرے،،صوبائی اسمبلی میں فاٹا کونمائندگی نہیں دی گئی تو ذمہ دارن لیگ حکومت ہوگی،ہم حکومت میں آکریہ کام کرلیں گے،،اسفندیارولی خان کا کہنا تھا کہ فاٹااور کیپی کے بعدشمالی اورجنوبی پشتون ایک ہوگا،غیرسطری لکیریں قومیں تقسیم نہیں کرسکتی،یہ لکیریں ختم کرادیں گے،ان کا کہنا تھاکہ اس وقت کریڈیٹ لینے کے بجائے پی ٹی ایم سے مذاکرات کئے جائیں گے،میاں صاحب نے ہمیں پہچان دینے کیلئے آوازنہیں اٹھائی،،پاکستان مسلم لیگ ن نے زرداری سے کہا کہ پختونخوا کے مطالبے سے ہٹ جائیں لیکن آصف زرداری نے کہا کہ پختونخوا کو پہچان ملے گی،ولی خان سے نوازشریف نے عدہ کیاکہ ہماراساتھ دینا ہم صوبے کانام بدل دیں گے ہم نے تھ دیا لیکن نوازشریف انکاری ہوگئے،،اے این پی کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ڈھائی سوسال بعدجشن پختونخوا منارہے ہیں،اپنی مٹی کیلئے اپنا نام دلوانے میں بہت سے گھر اجڑے،بہت سی خواتین بیواہ ہوئیں،ڈھائی سو سال تک پشتونوں کی شناخت نہیں تھی،فاٹامیں ستر سال میں ایک یونیورسٹی نہیں بنی،جشن خیبر پختونخوا کی تقریب سے پارٹی کے دیگر قائدین نے بھی خطاب کیا۔