فریال تالپور کی پی پی رہنمائوں کو 2012ء کے اساتذہ کا مسئلہ حل کرنے کی ہدایت

ملیر میں پی پی خواتین ونگ کی صدر سے ملاقات اساتذہ نے تفصیلات سے آگاہ کیا اور خط بھی پیش کیا سعید غنی اور مرتضی بلوچ اساتذہ کے مسئلے کو حل کرنے میں معاونت کریں،فریال تالپور کی اساتذہ سے گفتگو

پیر مئی 22:28

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی صدر فریال تالپور نے پیپلز پارٹی کے رہنمائوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ سال2012ء کے اساتذہ اور نان ٹیچنگ اسٹاف کے مسائل کو حل کرنے میں اپنا بھرپور کردار ادا رکریں ۔تفصیلات کے مطابق محکمہ اسکول ایجوکیشن میں سال2012ء میں بھرتیوں کے بعد سے اب تک تنخواہوںسے محروم اساتذہ کے وفد نے گذشتہ روز پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی صدر فریال تالپور سے ملیر میں ملاقات کی اور انہیں بتایا کہ سال2012ء میں ملازمتیں حاصل کرنے والے اساتذہ 6سال سے تنخواہوں سے محروم ہیں حالانکہ سندھ کے دیگر تمام اضلاع میں سال2012ء کے بھرتی اساتذہ کو اب تک تنخواہیں مل رہی ہیں ۔

اساتذہ کے وفد نے بتایا کہ کراچی ،ضلع سکھر،گھوٹکی ،،سانگھڑ،نوشہرو فیروزاورخیرپور کے 4463اساتذہ تنخواہیںنہ ملنے کے سبب کسمپرسی کی زندگی گذار رہے ہیں حالانکہ ان اساتذہ کی اسکرونٹی بھی ہو چکی ہے اور یہ اساتذہ اب تک اسکولوں میں اپنے فرائض سر انجام دے رہے ہیں مگر انہیں تنخواہیں دینے والا کوئی نہیں ۔

(جاری ہے)

اساتذہ کے وفد سے فریال تالپور سے درخواست کی کہ وہ ہماری تنخواہوں کے اجراء میں مدد کریں جس پر پیپلز پارٹی خواتین ونگ کی صدر فریال تالپور نے موقع پر موجود پیپلز پارٹی کے وزیر سعید غنی اور کچی آبادی کے مشیر مرتضی بلوچ کو ہدایت کی وہ ان اساتذہ کے مسئلے کو حل کرنے میں معاونت کریں ۔اس موقع پر اساتذہ نے فریال تالپور کو خط کے ذریعے تمام تفصیلات سے بھی آگاہ کیا ۔