ریڑھی گوٹھ کے ماہی گیر لاوارث نہیں، ماہی گیروں کی ملک گیر تنظیم ان کی مالکی کر رہی ہے، چیئرمین پاکستان فشر فوک فورم محمد علی شاہ

پاکستان فشر فوک فورم نے ہمیشہ ماہی گیروں کے حقوق کے حصول کیلئے جدوجہد کی ہے، جس کے نتیجے میں متعدد کامیابیوں نے ان کے قدم چومے ہیں

پیر مئی 23:08

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) پاکستان فشر فوک فورم کے مرکزی چیئرمین محمد علی شاہ نے کہا کہ اب ریڑھی گوٹھ کے ماہی گیر لاوارث نہیں، ماہی گیروں کی ملک گیر تنظیم ان کی مالکی کر رہی ہے۔ پاکستان فشر فوک فورم نے ہمیشہ ماہی گیروں کے حقوق کے حصول کیلئے جدوجہد کی ہے، جس کے نتیجے میں متعدد کامیابیوں نے ان کے قدم چومے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ریڑھی گوٹھ میں منعقدہ ایک بڑے احتجاجی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

ریڑھی گوٹھ میں منعقدہ احتجاجی جلسہ میں ہزاروں ماہی گیروں اور عورتوں نے شرکت کی۔ اس موقع پر احتجاجی جلسہ میں پاکستان فشر فوک فورم کے مرکزی چیئرمین محمد علی شاہ، علاقے کی سیاسی شخصیت سہیل احمد جاموٹ، حاجی خادم حسین شیخ، ناخدا احمد لالوانی، ابوبکر قاسمانی، مصطفی قاسمانی اور طالب کچھی نے مہمان خاص کے طور پر شرکت کی۔

(جاری ہے)

احتجاجی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے محمد علی شاہ نے مزید کہا کہ ریڑھی گوٹھ کے ماہی گیروں سے نہ صرف کراچی لیکن سندھ بھر کے ماہی گیر ان کے جدوجہد میں برابر کے شریک ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ظالم اور قاتل سمندری وڈیرے کے مظالم کیخلاف جدوجہد کا آغاز ہوچکا ہے، انہوں نے کہا کہ جب تک دائود جت کو گرفتار نہیں کیا جاتا تب تک ریڑھی گوٹھ کے ماہی گیروں کی جدوجہد جاری رہے گی۔ انہوں نے پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور کوچیئرمین آصف علی زرداری سے مطالبہ کیا کہ ماہی گیروں کے قاتل سمندری وڈیرے دائود جت کو پیپلز پارٹی سے نیکالی دی جائے۔

انہوں نے کہا کہ بھٹو ازم روٹی، کپڑا اور مکان ہے، اگر بھٹو ازم دائود جت کا نام ہے کہ پھر آئندہ الیکشن میں یہ ماہی گیر پاکستان پیپلز پارٹی کو ووٹ نہ دینے کا وچن کرتے ہوئے الیکشن کا بائیکاٹ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر ریڑھی گوٹھ کے مظلوم ماہی گیر ظالم سمندری وڈیرے کو شکست دینا چاہتے ہیں تو انہیں مستقل مزاجی سے پرامن جدوجہد جاری رکھنی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ دائود جت ایک فلمی غنڈے کا کردار ہے، لیکن ماہی گیر ایک پلیٹ فارم پر متحد ہوکر ان کیخلاف آواز بلند کریں گے تو وہ دن دور نہیں جب دائود جت یہ علاقہ چھوڑنے پر مجبور ہوجائیگا۔ انہوں نے ایس ایس پی اکرم ابڑو کو انتباہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر ڈاکس پولیس نے آئندہ ایک ہفتہ کے دوران شہید ماہی گیر عثمان قاسمانی کے قاتلوں کو گرفتار نہیں کیا تو ریڑھی گوٹھ کے یہ ہزاروں ماہی گیر ڈاکس تھانے کے سامنے دھرنا دینے پر مجبور ہوجائیں گے۔

انہوں نے اعلان کیا کہ اگر قاتل سمندری وڈیرے دائود جت اور اس کے بیٹوں کو گرفتار نہیں کیا گیا تو ریڑھی گوٹھ سے وزیراعلیٰ سندھ ہائوس تک پیدل مارچ کیا جائیگا۔ اس موقع پر علاقہ کے سیاسی رہنما سہیل احمد جاموٹ نے کہا کہ سمندری وڈیرہ دائود جت اور سکھن تھانہ کے اہلکار ماہی گیروں کے دشمن بنے ہوئے ہیں، انہوں نے کہا کہ ریڑھی گوٹھ کے ماہی گیروں سے ظلم کی انتہا ہے، ایک طرف ماہی گیروں پر جھوٹے مقدمات درج کر کے انہیں گرفتار کیا جارہا ہے تو دوسری جانب ان پر سمندر میں مسلح حملہ کر کے شہید کیا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اب وقت آن پہنچا ہے کہ دائود جت کا خاتمہ ہوسکے اور ماہی گیروں کو ان کے ظلموں سے نجات حاصل ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ ہم ریڑھی گوٹھ کے ماہی گیروں کی جدوجہد میں برابر کے شریک ہیں۔ اس موقع پر علاقہ کی معزز شخصیت حاجی خادم حسین شیخ نے کہا کہ ہم ماہی گیر بے غیرت نہیں، حقیقت میں بے غیرت وہ قاتل سمندری وڈیرہ دائود جت ہے، جو ہماری ماہی گیر بہنوں کی بُری نظر سے دیکھتا ہے، جو ہمارے گھروں چادر اور چاردیواری کا خیال نہیں رکھا، جو ہمارے گوٹھ کی زمینوں پر قبضہ کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اب امیدوں کی نئی صبح طلوع ہوچکی ہے اور دائود جت کا سورج غروب ہونے کو ہے، اب وہ دن دور نہیں جب ریڑھی گوٹھ کے ماہی گیر دائود جت کے شکنجے سے آزادی حاصل کرسکیں۔ اس موقع پر طالب کچھی، حاجی احمد لالوانی، ابوبکر قاسمانی، مصطفی قاسمانی و دیگر نے خطاب کیا۔