لاہور ہائیکورٹ ،پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کے خلاف درخواست پر وفاقی حکومت وزارت پٹرولیم اور اوگرا کو نوٹس جاری، جواب طلب

پیر مئی 23:43

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کے خلاف درخواست پر وفاقی حکومت وزارت پٹرولیم اور اوگرا کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔ جسٹس شاہد کریم کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے جوڈیشل ایکٹو ازم پینل کی درخواست ہر سماعت کی۔ درخواست میں وفاقی حکومت اوگرا اور دیگر کو فریق بنایا گیا ہے ۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ پوری دنیا میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق حکومتی بیان بے بنیاد ہے۔

(جاری ہے)

حکومت نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ اضافی سیل ٹیکس وصولی کے باعث کیا ہے۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے ملک بھر میں مہنگائی میں مزید اضافہ ہوگا۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ آئین کے آرٹیکل 9۔

14 اور 18 کی خلاف ورزی ہے، عالمی سطح پر بھی پٹرولیم قیمتوں میں اتنا اضافہ نہیں ہوا جتنا پاکستان میں کیا جارہا ہے، حکومت کا پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر 15 فیصد سے زائید اضافی سیل ٹیکس وصولی غیر آئینی ہے، درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت حکومت کو اضافی سیل ٹیکس کی وصولی کالعدم قرار دیتے ہوئے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا حکم دے ۔