اسلام آباد،الیکشن کمیشنکا ا عام انتخابات کے انعقاد کے لئے ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران ، ریٹرننگ افسران اور اسٹنٹ ریٹرننگ افسران کی تعیناتی کا اعلان

پورے ملک میں 131دسٹرکٹ ریٹرننگ ،335ریٹرننگ اور577اسسٹنٹ رٹرننگ افسران کی حیثیت سے خدمات سرانجام دیں گے پنجاب میں 141،سندھ میں 27خیبر پختونخوا میں 25جبکہ بلوچستان میں 16ریٹرننگ افسران کی تعیناتی عمل میں لائی جائے گی فاٹا کی 7ایجنسیوں میں پولیٹیکل ایجنٹس ،ایف آر پشاور ،بنوں اور کوہاٹ کا ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افیسر کمشنر بنوں ہونگے

پیر مئی 23:48

اسلام آباد،الیکشن کمیشنکا ا عام انتخابات کے انعقاد کے لئے ڈسٹرکٹ ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 مئی2018ء) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے اگلے عام انتخابات کے انعقاد کے لئے ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران ، ریٹرننگ افسران اور اسٹنٹ ریٹرننگ افسران کی تعیناتی کا اعلان کر دیا ،ڈسٹرکٹ ریٹرننگ اور ریٹرننگ افسران کا تعلق عدلیہ جبکہ اسسٹنٹ ریٹرننگ افسران کا تعلق انتظامی افسران سے ہے ،پورے ملک میں 131دسٹرکٹ ریٹرننگ ،335ریٹرننگ اور577اسسٹنٹ رٹرننگ افسران کی حیثیت سے خدمات سرانجام دیں گے ،،پنجاب میں 141،،سندھ میں 27خیبر پختونخوا میں 25جبکہ بلوچستان میں 16ریٹرننگ افسران کی تعیناتی عمل میں لائی جائے گی ،،فاٹا کی 7ایجنسیوں میں پولیٹکل ایجنٹس جبکہ ایف آر پشائور ،،بنوں اور کوہاٹ کا ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افیسر کمشنر بنوں ہونگے الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری ہونے والے تفصیلات کے مطابق اگلے عام انتخابات کیلئے ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران ،ریٹرننگ افسران اور اسسٹنٹ ریٹرننگ افسران کی تعیناتی کا عمل مکمل کر لیا گیا پورے پاکستان میں ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنزججز ہونگے۔

(جاری ہے)

تاہم کچھ اضلاع اور فاٹا میں جوڈیشل افسران کی عدم دستیابی کی وجہ سے وہاں ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران انتظامیہ سے لئے گئے ہیں ریٹرننگ افسران کی اکثریت کا تعلق بھی ماتحت عدلیہ سے ہے قانون کے مطابق اسسٹنٹ ریٹرننگ افسران کی تعیناتی انتظامی افسران سے کی گئی ہے۔ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران کی پورے ملک میں کل تعداد 131 ہے۔ ملک کے ہر ضلع میں ایک ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسر ہوگا فاٹا اور بلوچستان کے تین اضلاع شیرانی ، کوہلواور سکندر آباد کے تمام ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز ججز ہونگے۔

فاٹا کی سات ایجنسیوں میں ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران ایجنسیوں کے پولیٹکل ایجنٹس ہونگے جبکہ ایف ار پشاور،، بنون ، کوہاٹ کا ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسر کمشنر بنون ڈویڑن ہوگاخیبر پختونخوا میں 25 ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران تعینات کئے گئے ہیں ہر ضلع کا ڈسٹرکٹ اینڈسیشن جج ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسرہوگا خیبر پختونخوا میں قومی اسمبلی کی 39 نشستوں کے لئے 39 ریٹرننگ افسران تعینات کئے گئے جوکہ ایڈیشنل سیشنز ججز/اور سینئر سول ججز ہیں۔

اسطرح خیبر پختونخوا میں صوبائی اسمبلی کی 99 نشستوں کے لئے 99 ریٹرننگ افسران تعینات ہوگئے ہیں جوکہ سول ججز ہونگے۔۔پنجاب میں 36 ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران کی تعیناتی کی گئی ہے جو سب ڈسٹرکٹ اینڈسیشنز ججز ہیں۔ پنجاب میں قومی اسمبلی کی 141 نشستوں کے لئے 141 ریٹرننگ افسران کی تعیناتی کی گئی جو تمام ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز ججز ہونگے۔ جبکہ صوبائی اسمبلی کی 297 نشستوں کے لئے 297ریٹرننگ افسران کی تعیناتی کی گئی ہے جوکہ سینئر سول ججز / سول ججز ہیں۔

سندھ میں 27 ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ہے۔ جو تمام ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز ججز ہیں۔۔سندھ کی قومی اسمبلی کی 61 نشستوں کے لئے 61 ریٹرننگ افسران تعینات کئے گئے جو ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز ججز / سینئر سول ججز ہیں۔ سندھ کی صوبائی اسمبلی کی 130 نشستوں کے لئے 130 ریٹرننگ افسران تعینات ہیں جو سول ججز ہیں۔۔بلوچستان میں 34 ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسران کی تعیناتی ہوگئی بلوچستان کی قومی اسمبلی کی 16 نشستوں پر 16 ریٹرننگ افسران تعینات کئے گئے ہیں جو سب ماتحت عدلیہ سے لگائے گئے ہیں جبکہ صوبائی اسمبلی کی 51 نشستوں کے لئے 51 ریٹرننگ افسران کی تعیناتی عمل میں لائی گئی جس میں سے 4 انتظامیہ کے افسران کے علاوہ سب جوڈیشنری سے تعینات ہوئے۔

اسلام آباد میں ایک ڈسٹرکٹ ریٹرننگ افسرکی تعیناتی ہوگئی جوکہ ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ہے۔ اسلام آباد کی قومی اسمبلی کی 3 نشستوں کے لئے 3 ریٹرننگ افسران تعینات ہوئے جوکہ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز ججز ہے۔۔۔اعجاز خان