حکومت سارک خطہ سے کاروباری برادری کو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کیلئے سہولیات فراہم کریگی‘شہباز شریف

منگل مئی 12:43

حکومت سارک خطہ سے کاروباری برادری کو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کیلئے ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے معروف بزنس لیڈر افتخار علی ملک کو سارک چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا سینئر نائب صدر مقرر ہونے پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی حکومت سارک خطہ سے کاروباری برادری کو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کے لئے ہر طرح سے اور مکمل سہولیات فراہم کرے گی۔ اپنے مبارکباد کے پیغام میں وزیر اعلیٰ پنجاب نے کہا کہ سارک میں تمام رکن ممالک کی معیشتوں کے استحکام اور باہمی تعاون کو فروغ دینے کے بہت زیادہ امکانات موجود ہیں اور وہ پر امید ہیں کہ افتخار علی ملک کی قیادت میں یہ تنظیم علاقے کی اقتصادی، ثقافتی اور سماجی ترقی کے مقاصد کے حصول کے لئے بھر پور کام کرے گی۔

انہوں نے رکن ممالک کے درمیان رابطوں کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستانی کاروباری برادری ملک کے اندر اور باہر دونوں جگہ ملکی مفادات کیلئے کام کررہی ہے اور تجارت کے فروغ میں اس کا کردار قابل ذکر ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ پاکستان اقتصادی شعبے میں مثبت پالیسیوں کے باعث سارک کے مقاصد کے حصول کے لئے اپنا مثبت کردار جاری رکھے گا۔ میاں شہباز شریف نے کہا کہ جنوبی ایشیا بے شمار قدرتی وسائل سے مالا مال ہے اوران سے بھر پور فائدہ اٹھانے کیلئے خطے میں تعاون بڑھانے کے لئے پاکستان اپنا کردار ادا کرنے کے لئے تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ علاقائی ترقی کو فروغ دینے کے لئے ممبر ممالک کے درمیان ریل، سڑک اور فضائی رابطوں کا قیام انتہائی ٖضروری ہے۔ وزیر اعلیٰ کے مبارکباد کے پیغام کا جواب دیتے ہوئے سارک چیمبر کے سینئر نائب صدر افتخار علی ملک نے میاں شہباز شریف کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ سارک چیمبر نہ صرف علاقائی کنیکٹوٹی اور تعاون میں فروغ بلکہ پاکستان اور پاکستان کے درمیان دو طرفہ تعلقات اور تجارت کی بحالی کیلئے بھی سرگرم عمل ہے اور ان کا فوکس جنوبی ایشیا میں ٹریڈ لبرلائزیشن کے عمل کو تیز کرنے پر ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ جنوبی ایشیائی ممالک کا نجی شعبہ سماجی اور معاشی انضمام کے لئے پرعزم ہے اور کاروباری برادری کا خیال ہے کہ خطے کی ترقی اور غربت کے خاتمے سمیت تمام بڑے چیلنجوں کو حل کرنے کے لئے علاقائی اقتصادی انضمام، ہم آہنگی اور باہمی تعاون کیلئے کوششیں جاری رہنی چاہئیں۔