انٹرنیشنل ڈیسک

اسرائیلی وزیراعظم کے گھر جاپانی ہم منصب کیلئے عشائیہ،میٹھا جوتے میں پیش جاپانی سفارتکاروں کا شدید ردعمل،ہم اس واقعے کو کبھی نہیں بھولیں گے،بیان

منگل مئی 15:50

مقبوضہ بیت المقدس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) اسرائیل کے وزیراعظم کی جانب سے سرکاری رہائش گاہ پر جاپان کے وزیر اعظم شنزو آبے کو دیئے گئے عشائیے میں طعام کے بعد پیش کیا جانے والا میٹھا جوتے کی شکل کے بنے برتن میں پیش کیا گیا۔عالمی نشریاتی ادارے کے مطابق جاپان کے وزیراعظم شنزو آبرو اپنی اہلیہ کے ہمراہ رواں ماہ کے پہلے ہفتے اسرائیل کے سرکاری دورے پر پہنچے تھے،جہاں اسرائیلی وزیراعظم نتن یاہو اور ان کی اہلیہ نے مہمانوں کو اپنے سرکاری گھر پر مدعو کیا لیکن پٴْر تکلف عشائیے میں معروف شیف کی غلطی نے تنازع کھڑا کردیا۔

اسرائیلی وزیراعظم کے ذاتی شیف موشے سیونگ نے عشائیے کے بعد روایتی میٹھا دھات سے بنے ہوئے جوتے میں پیش کردیا جس میں چاکلیٹس اور شیریں خوان موجود تھیں۔

(جاری ہے)

یہ جوتے بڑے سلیقے سے کھانے کی میز پر رکھے ہوئے تھے۔جاپان میں جوتے کو انتہائی توہین آمیز سمجھا جاتا ہے اور جاپانی اپنے گھروں اور دفاتر میں جوتے اتار کر داخل ہوتے ہیں جب کے اراکین پارلیمان بھی اپنے دفاتر میں جوتے لے کر نہیں جاتے۔

جاپان کے وزیراعظم نے کسی قسم کا منفی ردعمل دیئے بغیر شیریں خوان کو بھی چکھا اور چاکلیٹس بھی کھائے،تاہم جاپانی سفیروں نے اسے توہین آمیز رویہ قرار دیا جبکہ دیگر ممالک نے سفارت کاروں کا کہنا تھا کہ جاپان میں جوتے سے زیادہ بے وقعت چیز اور کوئی نہیں ہے۔جاپانی اس واقعے کو نہیں بھولیں گے۔

متعلقہ عنوان :