کوٹلی ‘منشیات فروشی میں اضافہ کیخلافشہریوں کی ’’سیو کوٹلی‘‘کے پلیٹ فارم سے واک کا انعقاد

منگل مئی 18:06

کوٹلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) کوٹلی میں منشیات فروشی میں اضافہ’’سیو کوٹلی‘‘کے پلیٹ فارم سے شہریوں نے ریسٹ ہاؤس سے واک شروع کی جو پریس کلب میں اختتام پذیر ہوئی۔شرکاء نے شہر بھر کا چکر لگایا ،مظاہرین منشیات فروش ہائے ہائے،سہولت کار ہائے ہائے،،منشیات کے اڈے بند کرو،،منشیات مافیا ہائے ہائے کے نعرے لگاتے رہے۔ایوان صحافت کوٹلی میں واک کے اختتام پر شرکاء واک سے خطاب کرتے ہوئے۔

سیو کوٹلی تحریک کے کواڈینیٹر انجنئیر ملک وقاص کشمیری،،تحریک انصاف کے متحرک راہنماء پروفیسر حبیب ملک۔ انجمن تاجراں آزاد کشمیر کے سیکرٹری جنرل مسعود رضا سیال، جماعت اسلامی کے رہنما حبیب الرحمان آفاقی، مسلم لیگ(ن) کے رہنما شیخ عاشق فراز، ملک نثار،وقاص ملک، مبشر چوہدری، سردار بابر،قمر گیلانی، شفقت گیلانی اور دیگر نے کہا کہ کوٹلی انتظامیہ لاکھوں کروڑوں کا بجٹ کھا کر اپنا پیٹ ٹھنڈا کرتی ہے مگر معاشرے میں لگی منشیات کی اس آگ کو ٹھنڈا کرنے میں کوئی کردار ادا نہیں کر رہی ہے۔

(جاری ہے)

منشیات فروشوں نے کوٹلی کے مستقبل داؤ پر لگا دیا ہے، منشیات فروشی کی یہ لعنت شہر کی گلیوں، دیہاتوں سے ہوتی ہوئی کالج اور یونیورسٹی میں پہنچ چکی ہے،افسوس ہمارے قانون نافذ کرنے والے ادارے اس لعنت کی روک تھام کے لیے کوئی کردار ادا نہیں کر رہے ہیں۔ تاجر رہنما حبیب ملک نے انتہائی جذباتی انداز میں سوال اُٹھایا کہ جب پولیس منشیات فروشوں کے کارندوں کو گرفتار کرلیتی ہے تو پھر اس دھندے میں ملوث سرغنوں تک کیوں نہیں پہنچ پاتی ، کیا قانون صرف غریب اور چھوٹے لوگوں کے لیے ہے کسی بڑے شخص کا قانون کچھ نہیں بگاڑ سکتا ۔

اُنھوں نے کہا کہ یہاں بڑے بڑے لوگ ہیں جو منشیات فروشی کے دھندے کی پشت پنائی کرتے ہیں اور پولیس اُن کے بارے میں جانتی بھی مگر کارروائی کرنے سے قاصر ہے ۔مقررین کا کہنا تھا کہ پولیس کو ان جرائم پیشہ افراد کے خلاف گھیرا تنگ کرنا ہوگا جبکہ شہریوں کو اس لعنت سے بچاؤ کے لیے اپنے بچوں کی خصوصی تربیت کا اہتمام بھی کرنا ہوگا۔ مقررین نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ہم کوٹلی جو منشیات فروشوں کے لیے جنت بن چکا ہے سے اس لعنت کے خاتمہ تک اپنی یہ جدوجہد جاری رکھیں گے۔