منرل واٹر کے 8 مختلف برانڈز کو مضر صحت قرار

منگل مئی 18:18

منرل واٹر کے 8 مختلف برانڈز کو مضر صحت قرار
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) پاکستان تحقیقاتی کونسل برائے آبی وسائل (پی سی آر ڈبلیو آر) نے تجزیاتی رپورٹ کے بعد منرل واٹر کے 8 مختلف برانڈز کو مضر صحت قرار دیدیا۔ مضر صحت قرار دیئے گئے برانڈز میں ایلڈن پریمئیم، آکوا فائن، پیور آکوا، لیون، زام، آکوا گولڈ، پیور 18 اور آب نور شامل ہیں۔ منگل کو پی سی آر ڈبلیو آر نے وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کی جانب سے دی گئی ہدایات کے مطابق منرل واٹر بوتلوں کی جانچ پڑتال کی سہ ماہی رپورٹ جاری کی ہے۔

(جاری ہے)

رواں سال جنوری سے مارچ تک سہ ماہی رپورٹ کے مطابق گزشتہ تین ماہ کے دوران اسلام آباد، راولپنڈی، پشاور، ملتان، لاہور، بہاولپور، ٹنڈو جام، کوئٹہ اور کراچی میں مختلف برانڈز کے منرل واٹر کے نمونے حاصل کرکے تجزیہ کیلئے لیبارٹری بھیج دیئے گئے۔ مکمل تجزیہ کے بعد 8 برانڈز کے منرل واٹر کیمیائی اور مائیکرو بیالوجیکل آلودگی کے باعث مضر صحت قرار دیئے گئے۔ مذکورہ منرل واٹر میں آرسینک کی زیادہ مقدار پائی گئی۔ آرسینک کی زیادہ مقدار سے ذیابیطیس، جلد، دل، ہائپر ٹینشن اور دیگر امراض لاحق ہو سکتے ہیں۔