کمبوڈیا ، آلودہ مشروب پینے کے بعد13 افراد ہلاک ، 150ہسپتال منتقل

منگل مئی 21:04

ْنوم پنھ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) وسطی کمبوڈیا میں آلودہ مشروب پینے کے بعد کم از کم13 افراد ہلاک اور لگ بھگ 150ہسپتال منتقل ہوگئے ہیں،یہ بات محکمہ صحت کے اہلکاروں نے گزشتہ روز بتائی،جنہوں نے اس کا الزام گھر میں بننے والے چاول،شراب یا پانی پر عائد کیا ہے۔ ہلاکتوں کا آغاز تین مئی کو ہوا،جس نے صوبہ کریٹی کے غریب دیہاتی ضلع چیٹ بوری کے دو دیہاتوں کو ہلا کر رکھ دیا ہے ،13افراد ہلاک ہوگئے ہیں،یہ بات صوبائی محکمہ صحت کے ڈائریکٹر چیانگ ساؤتھا نے بتائی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا ہے کہ ہمیں ابھی تک معلوم نہیں ہوسکا کہ اس واقعہ کی وجہ کیا بنی،ہم یہ وجہ جاننے کیلئے کام کر رہے ہیں۔ وزارت صحت نے کہا ہے کہ مقامی چاول الکوحل میں میتھنول کی بڑی شرح پائی گئی ہے،جو زہریلی ہوسکتی ہے۔ لیکن اہلکار پانی کے نمونوں کے معائنوں کے نتائج کا بھی انتظار کر رہے ہیں۔ وزارت صحت نے دیہاتیوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ شراب الکوحل پینا بند کریں اور خوراک اور پانی کے معاملے میں حفظان صحت کے اصولوں کا بہت زیادہ خیال رکھیں۔کمبوڈیا کا شمار ایشیاء کے افلاط زدہ ترین ممالک میں ہوتا ہے اور صحت اور حفاظتی معیار بڑے شہروں کے باہر موجود ہی نہیں ہیں۔

متعلقہ عنوان :