ہائر ایجوکیشن کمیشن ، مائیکروسافٹ نے امیجن کپ 2018کے قومی مقابلوں کی فاتح ٹیموں کا اعلان کردیا

منگل مئی 22:44

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) ہائر ایجوکیشن کمیشن اور مائیکروسافٹ نے امیجن کپ 2018جو کہ ایک ٹیکنالوجی سے متعلق مقابلہ ہوتا ہے کی جیتنے والی ٹیموں کا اعلان منگل کے ر وز کمیشن سیکرٹریٹ میں ایک تقریب کے دوران کیا۔ نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی اسکول آف انجینئرنگ اینڈ کمپیوٹر سائنس (سیکس) نے پہلی پوزیشن حاصل کی جبکہ سٹی یونیورسٹی آف سائنس اینڈ انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی اوربحریہ یونیورسٹی نے بتدریج دوسری اور تیسری پوزیشن حاصل کیں ۔

چیئرمین قومی اسمبلی قائمہ کمیٹی برائے فیڈرل ایجوکیشن اینڈ پروفیشنل ٹریننگ ڈاکٹر امیر اللہ مروت اس تقریب کے مہمان خصوصی تھے جبکہ ایگزیکٹو ڈائریکٹر ، ہائر ایجوکیشن کمیشن، ڈکٹر ارشد علی، ممبر پلاننگ اینڈ آپریشن ، ہائر ایجوکیشن کمیشن، ڈاکٹر غلام رضا بھٹی اور مائیکروسافٹ کے کنٹری جنرل منیجر عابد زیدی بھی موجود تھے۔

(جاری ہے)

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر امیر اللہ مروت نے کہا کہ قوموں کی بقا کے لیے تعلیم انتہائی اہمیت کی حامل ہے اور پاکستانی نوجوانوں میں بہت ٹیلنٹ ہے جس کا مظاہرہ انھوں نے امیجن کپ کے دوران بہت خوبی سے کیا ہے ۔

انھوں نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ میں پر امید ہوں کہ ہم پاکستانی اب سب کچھ کر سکتے ہیں مگر اس کے لیے ہمیںقوت ارادی کا عملی مظاہرہ کرنا ہوگا ۔ انھوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہمیں خود احتسابی کو اہمیت دینا ہوگی تاکہ ہم انفرادی اور قومی مسائل کو حل کر سکیں ۔ انھوں نے کہا کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی سمیت تمام شعبہ ہائے زندگی میں ہمیں جدید ٹیکنالوجی کو متعارف کروانا ہوگا اور ہمیں نت نئے خیالات سامنے لانے اور ایجادات کرنے والے طلباء اور محققین کو سراہنا ہوگا ۔

اس موقع پر بات کرتے ہوئے مہمان خصوصی نے صنعتی شعبہ پر زور دیتے ہوئے کہا کہ صنعتی شعبہ کو چاہیے کہ وہ طلباء کو اعلی تعلیم اور تحقیق کے لیے وظائف دیں مزید براں انھوں نے اس موقع پر طلباء اور محققین کو نصیحت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو درپیش مسائل کے حل کے لیے اپنی توانائی خرچ کریں ۔ امیجن کپ جیتنے والے طلباء کو مبارک دیتے ہوئے ڈاکٹر ارشد علی کا کہنا تھا کہ یہ مقابلہ جدت طرازی کا ہے ۔

انھوں نے کہا کہ یہ مقابلہ طلباء میں سوشل اور ٹیکنالوجیکل انٹرپرینیورشپ کو فروغ دیتا ہے تاکہ طلباء اس قابل ہو سکیں کہ وہ ٹیکنالوجی کے ذریعے سماجی اور معاشرتی مسائل کا حل تلاش کرسکیں ۔ انھوں نے کہا کہ ہم نے امیجن کپ کے مقابلوں کے دوران دیکھا ہے کہ طلباء نے جدید خیالات کے ساتھ معاشرے کے مسائل کو حل کرنے کے لئے اپنی صلاحیتوں کے اظہار کا آغاز کیا اور آج یہ طلباء ملٹی ملین اداروں کے مالک ہیں ۔

ایگزیکٹو ڈائریکٹر نے اپنی گفتگو کے اختتام میں کہا کہ انھیں طلبا ء پر فخر ہے جنھوں نے Imagine Cupکے مقابلوں میں شرکت کی ۔ عابد زیدی نے بھی اس موقع پر تقریب سے خطاب کیا ۔ ان کا کہنا تھا جب ہم طلباء کو دیکھتے ہیں تو ہمیں یہ یقین ہو جاتا ہے کہ یہ صحیح معنوں میں تبدیلی لانے کے اہل ہیں مگر ان کو درست سمت میں چلانے اور وسائل کی فراہمی کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے۔

امیجن کپ مائیکروسافٹ کے تعاون سے ٹیکنالوجی کے طلباء کے مابین ایک مقابلہ کا پلیٹ فارم ہے جو طلباء کو اس قابل بناتا ہے کہ وہ سماجی اور معاشرتی مسائل کا حل ٹیکنالوجی کی مدد سے تلاش کریں اور اسے ذریعہ آمدن بھی بنا سکیں ۔ پاکستان میں اس مقابلے کے ذریعے اب تک کئی طلباء نے اپنے خیالات کو حقیقت کا رخ دیا ہے ۔ اس سال مائیکروسافٹ نے 56پاکستانی جامعات کے دورے کیے ۔ تقریب کے اختتام میں قومی سطح پر جیتنے والی ٹیم اور علاقائی فاتحین کے مابین بھی تعریفی اسناد اور شیلڈز تقسیم کی گئیں جبکہ اس مقابلے کی نیشنل لیول کی فاتح ٹیم کو سیٹل ، امریکہ میں بین الاقوامی سطح پر مقابلے میں شرکت کرنا ہوگی ۔ اس مقابلے کو جیتنے والی ٹیم کو 100,000امریکی ڈالر انعام دیا جائے گا ۔