لاہور، پیٹرولیم مصنوعات سے متعلق سٹوریج پالیسی کے خلاف درخواست پر درخواست گزار کے آئل سٹوریج کو ڈی سیل کرنے کا حکم

منگل مئی 23:05

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے پیٹرولیم مصنوعات سے متعلق سٹوریج پالیسی کے خلاف درخواست پر درخواست گزار کے آئل سٹوریج کو ڈی سیل کرنے کا حکم دے دیا اور پالیسی کے حوالے سے حکومت اور دیگر فریقین سے 17 مئی کو تفصیلی جواب طلب کر لیا ۔

(جاری ہے)

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے شہری سہیل اصغر کی درخواست پر سماعت کی، سرکاری وکیل نے عدالت کو بتایا کہ پالیسی میں دی گئی اجازت سے زیادہ ڈیزل سٹور کرنے پر ٹینکر سیل کیا گیا ہے، جس پر درخواست گزار کے وکیل کا کہنا تھا کہ ان کے پاس 500 گیلن سے کم ڈیزل رکھنے کی گنجائش ہے جبکہ قانون کے مطابق پٹرول کی سٹوریج ممنوع اور ڈیزل کی سٹوریج 500 گیلن تک کی جاسکتی ہے، حکومت نے ڈیزل کی سٹوریج کو غیر قانونی قرار دے کر کاروبار سیل کر دیا ہے، حالانکہ قانون کے مطابق 500 گیلن تک ڈیزل نجی استعمال کیلئے رکھنے کی اجازت ہے، انہوں نے استدعا کی کہ عدالت ڈیزل کی سٹوریج کو قانونی قرار دیتے ہوئے کاروبار بحال کرنے کا حکم دے۔