لبنان، دارالحکومت میںسکیورٹی صورتحال کشیدہ

حزب اللہ اراکین کی ہتھیار بند ہو کر اشتعال انگیز نعرے بازی اور فائرنگ ،صورتحال پر قابو پانے کے لئے فوج طلب

منگل مئی 23:47

بیروت(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) لبنانی دارالحکومت میںسکیورٹی صورتحال کشیدہ ہو گئی،حزب اللہ اور امل موومنٹ کے متعدد ارکان ہتھیا بند ہو کر اشتعال انگیز نعرے بازی کرتے ہوئے فائرنگ اور گاڑیوں پر حملہ آور ہوئے،صورتحال پر قابو پانے کے لئے فوج کو طلب کیا گیا۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق لبنان کے دارالحکومت بیروت میںاس وقت سکیورٹی کشیدگی پھیل گئی جب حزب اللہ تنظیم اور امل موومنٹ کے متعدد ارکان نے سواریوں میں رہائشی علاقوں کا گشت کرتے ہوئے اشتعال انگیز نعرے بازی کی۔

(جاری ہے)

اس دوران بعض افراد نے براہ راست فائرنگ کی اور سڑکوں پر گاڑیوں پر حملہ بھی کیا۔ اس کے نتیجے میں لبنانی فوج صورت حال کو کنٹرول کرنے کے لیے مداخلت کرنے پر مجبور ہو گئی۔مذکورہ مظاہرین نے فرقہ وارانہ نعرے لگائے۔ یہ مجمع بیروت میں اٴْن نشستوں پر "شیعوں کی خصوصی" جیت کا جشن منا رہا تھا جو اس سے قبل لبنانی وزیراعظم سعد حریری کے حصّے میں تھیں۔چھ مئی کو ہونے والے انتخابات کے بعد حزب اللہ کے حامیوں کی ایک بڑی تعداد سابق مرحوم وزیراعظم رفیق حریری کی قبر پر پہنچی اور وہاں ان کی یادگار پر حزب اللہ کا پرچم لہرا دیا۔ سوشل میڈیا پر سرگرم حلقوں کی جانب سے وسیع پیمانے پر اس حرکت کی مذمت کی گئی۔