سپین بولنگ ’’دوسرا ‘‘کے بغیر بھی ممکن ہے ،ْ’

دوسرا 15 ڈگری میں رہتے ہوئے بالکل کی جا سکتی ہے ،ْثقلین مشتاق میں نے کسی نوجوان کو بھی سعید اجمل سے زیادہ محنت کرتے نہیں دیکھا ،ْ سعید اجمل کے ساتھ مجھے ہمدردی ہے ،ْ انٹرویو سعید اجمل کے بولنگ ایکشن میں تبدیلی کے بعد اس پر جو کام ہونا تھا وہ نہیں ہو سکا ،ْ سابق سپین بائولر

بدھ مئی 14:33

لندن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق آف سپنر ثقلین مشتاق نے کہاہے کہ آپ سپین بولنگ ’’دوسرا ‘‘کے بغیر بھی ممکن ہے ،ْ’دوسرا 15 ڈگری میں رہتے ہوئے بالکل کی جا سکتی ہے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کو دیئے گئے انٹرویو میں انہوںنے کہاکہ دوسرا 15 ڈگری میں رہتے ہوئے بالکل کی جا سکتی ہے ۔خود میں نے کی ہے اور کبھی بھی اپنے کریئر میں رپورٹ نہیں ہوا تاہم اس کے لیے صحیح تکنیک کی ضرورت ہے۔

گیند پر صحیح گرپ آنی چاہیے ،ْ اس کیلئے درکار مسلز (پٹھی) صحیح طور پر تیار ہوئے ہوں۔ثقلین مشتاق نے کہاکہ آف سپن بولنگ ’دوسرا‘ کے بغیر بھی ممکن ہے۔انہوںنے کہاکہ ہمارے یہاں یہ تاثر اتنا پختہ ہوچکا ہے کہ اگر کوئی بولر دوسرا نہیں کرسکتا تو وہ آف سپنر نہیں ہے ،ْاس بات کو ذہن سے نکالنے کی ضرورت ہے۔

(جاری ہے)

ہمارے سامنے آسٹریلیا کے نیتھن لائن کی مثال موجود ہے جو یہ گیند نہیں کرتے بلکہ صرف روایتی قسم کی آف سپن کرتے ہیں تاہم اس کے باوجو وہ اس دور کے سب سے کامیاب آف سپنر ہیں۔

انہوںنے کہا کہ مجھے سعید اجمل کے ساتھ دلی ہمدردی ہے کیونکہ میں نے کسی نوجوان کو بھی سعید اجمل سے زیادہ محنت کرتے نہیں دیکھا۔ ساری چیزیں کلیئر ہو گئی تھیں۔ میں نے کرکٹ بورڈ سے بھی کہا تھا کہ ابھی آدھا کام ہوا ہے ،ْابھی بہت کام ہونا باقی ہے تاہم سعید اجمل کے بولنگ ایکشن میں تبدیلی کے بعد اس پر جو کام ہونا تھا وہ نہیں ہو سکا۔

متعلقہ عنوان :