چین کی عالمی تجارتی تنظیم کی ایپلیٹ باڈی کے ممبران کے انتخاب کی اپیل

اگر عالمی تجارتی تنظیم تنازعات کے حل کی صلاحیت سے محروم رہتی ہے تو اسکے اصول و ضوابط پر موثر عمل پیرا نہیں رہا جا سکے گا، ڈبلیو ٹی او کی شہرت اور ساکھ کو بھی نقصان پہنچے گا ، یک طرفہ اور تجارتی تحفظ پسندی پر پابندیاں عائد نہیں کی جا سکیں گی عالمی تجارتی تنظیم میں چینی مندوب چانگ شیانگ چھن

بدھ مئی 14:51

چین کی عالمی تجارتی تنظیم کی ایپلیٹ باڈی کے ممبران کے انتخاب کی اپیل
جنیوا (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) چین نے عالمی تجارتی تنظیم کی ایپلیٹ باڈی کے ممبران کے انتخاب کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر عالمی تجارتی تنظیم تنازعات کے حل کی صلاحیت سے محروم رہتی ہے تو عالمی تنظیم کے اصول و ضوابط پر موثر عمل پیرا نہیں رہا جا سکے گا، ڈبلیو ٹی او کی شہرت اور ساکھ کو بھی نقصان پہنچے گا ، یک طرفہ اور تجارتی تحفظ پسندی پر پابندیاں عائد نہیں کی جا سکیں گی۔

چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق عالمی تجارتی تنظیم میں چین کے مندوب چانگ شیانگ چھن نے جنیوا میں ڈبلیو ٹی او کے ایپلیٹ باڈی کے ممبران کے انتخاب کی اپیل کی ہے، تاکہ عالمی تنظیم کے اس ادارے کو جلد از جلد معمول پر لایا جا سکے ۔عالمی تجارتی تنظیم کے ماتحت تجارتی تنازعات کا فیصلہ کرنے والی ایپلیٹ باڈی کو سات ممبران پر مشتمل ہونا چاہیے، تاہم امریکہ کی جانب سے نئے ممبران کے انتخاب میں مداخلت کے باعث اس وقت مذکورہ باڈی کے صرف چار ارکان فعال ہیں۔

(جاری ہے)

چانگ نے کہا کہ اگر عالمی تجارتی تنظیم تنازعات کے حل کی صلاحیت سے محروم رہتی ہے تو عالمی تنظیم کے اصول و ضوابط پر موثر عمل پیرا نہیں رہا جا سکے گا ۔اس سے ڈبلیو ٹی او کی شہرت اور ساکھ کو بھی نقصان پہنچے گا جس کے نتیجے میں یک طرفہ اور تجارتی تحفظ پسندی پر پابندیاں عائد نہیں کی جا سکیں گی۔

متعلقہ عنوان :